ناخن چبانے اور انگوٹھا چوسنے کی عادت میں مبتلا لوگوں کیلئے شاندار خوشخبری آگئی، سائنسی تحقیق میں ایسا فائدہ سامنے آگیا کہ کبھی کسی نے سوچا بھی نہ تھا

ناخن چبانے اور انگوٹھا چوسنے کی عادت میں مبتلا لوگوں کیلئے شاندار خوشخبری ...
ناخن چبانے اور انگوٹھا چوسنے کی عادت میں مبتلا لوگوں کیلئے شاندار خوشخبری آگئی، سائنسی تحقیق میں ایسا فائدہ سامنے آگیا کہ کبھی کسی نے سوچا بھی نہ تھا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

ولنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک) ہمارے ہاں انگوٹھا چوسنے اور دانتوں کے ناخن کاٹنے کا عمل بہت معیوب سمجھا جاتا ہے۔ تاثر ہے کہ اس سے بیماریاں لاحق ہوتی ہیں مگر نیوزی لینڈ کے ماہرین نے اپنی ایک تحقیق میں اس تاثر کو غلط ثابت کر دیا ہے۔ ڈیلی پاکستان گلوبل کی رپورٹ کے مطابق ماہرین کا کہنا ہے کہ بچوں کا انگوٹھا چوسنا یا بڑوں کا دانتوں سے ناخن چبانا ان کی صحت کے لیے مفید ہوتا ہے۔ تحقیق میں ثابت ہوا ہے کہ ایسے بچوں میں الرجی کی شکایت دوسروں کی نسبت بہت کم ہوتی ہے۔ ماہرین نے اس کی توجیح یہ بیان کی ہے کہ اس عمل سے بچوں میں قوت مدافعت پیدا کرنے والے بعض جرثومے داخل ہوتے ہیں جس کے باعث ان کے جسم الرجی و دیگر بیماریوں کے خلاف زیادہ مدافعت کرتے اور ان سے محفوظ رہتے ہیں۔

خاتون کو اپنی ہی ناف میں چھپی ایسی چیز مل گئی کہ انٹرنیٹ پر ہنگامہ برپا ہو گیا، ایسی کیا چیز چھپی ہوئی تھی ؟جان کر آپ بھی کانپ اٹھیں گے
ماہرین نے اس تحقیق کے لیے 1ہزار بچوں میں ان عادات کا ان کی عمر کے مختلف ادوار میں مشاہدہ کیا اور ان میں الرجی کے ٹیسٹ کیے۔ ان کی عادات 5سال، پھر سات سال، پھر 9سال اور پھر 11سال کی عمر میں پرکھی گئیں اور ان میں الرجی کی موجودگی کے ٹیسٹ 13اور پھر 32سال کی عمر میں کیے گئے۔ تحقیق کے نتائج میں ماہرین نے دیکھا کہ جو بچے شروع میں انگوٹھا چوستے تھے اور بڑے ہو کر ناخن چبانے کی عادت میں مبتلا ہو گئے ان میں کئی طرح کی الرجی میں مبتلا ہونے کے امکانات دیگر بچوں کی نسبت بہت کم تھے۔تاہم ان بچوں میں میں دمہ اور موسمی بخار کے حوالے کوئی فرق نظر نہیں آیا۔ جو بچے مسلسل انگوٹھا چوستے تھے 13سال کی عمر میں ہی وہ دیگر بچوں کی نسبت بہت کم الرجی کا شکار تھے۔ معاون تحقیق کار اور کینیڈا کی مک ماسٹریونیورسٹی کے پروفیسر میلکولم سیئرز کا کہنا تھا کہ ”ہم ان عادات کی حوصلہ افزائی نہیں کر رہے تاہم ہماری تحقیق میں ان کے کچھ مثبت پہلو بھی سامنے آئے ہیں۔ انگوٹھا چوسنے اور ناخن چبانے سے بچوں میں کچھ ایسے جراثیم بھی داخل ہوتے ہیں جو ان کے مدافعتی نظام کے لیے مفید ہیں اور انہیں مختلف الرجیز کے خلاف تقویت دیتے ہیں۔“

مزید :

ڈیلی بائیٹس -