مقبوضہ کشمیر، بھارتی افواج کی ریاستی دہشتگردی جاری، مزید 3کشمیری شہید

مقبوضہ کشمیر، بھارتی افواج کی ریاستی دہشتگردی جاری، مزید 3کشمیری شہید

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


سرینگر (آن لائن)مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی طرف سے خون کی ہولی کھیلنے کا سلسلے نہ رک سکا ،بھارتی وزیرداخلہ کی آمد پر 3کشمیریوں کی ’’بلی‘‘ چڑھا دی گئی،بھارتی سکیورٹی فورسز نے وحشیانہ انداز میں پیلٹ گن کا استعمال کرکے 150 احتجاجی مظاہرین کو زخمی کرڈالا، 48 روز میں شہید ہونے والے کشمیریوں کی تعداد105 تجاوز کر گئی ،متعدد زخمیوں کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے ، مقبوضہ وادی میں تاحال کرفیو نافذ ہونے کی وجہ سے لوگ گھروں میں محصور ہو کر رہ گئے ، انٹرنیٹ اور فون سروس بھی معطل ہے ، پلوامہ میں احتجاجی مظاہروں کے دوران گرینیڈ دھماکے میں تین افسران سمیت 15 اہلکار زخمی ہو گئے جن میں سے 5 کی حالت تشویشناک ہے ۔ تفصیلات کے مطابق بھارتی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ کی موجودگی میں وادی ایک بار انسانی لہو سے اس وقت سرخ ہوئی جب پلوامہ کے پرچھو علاقے میں فورسز اور پولیس نے احتجاج کر رہے لوگوں کو منتشر کرنے کیلئے ٹیر گیس اور پیلٹ بندوقوں کا دہانہ کھول دیا،جس کے ساتھ ہی47دنوں میں فورسز کی کاروائی میں جاں بحق ہونے والوں کی تعداد105تک پہنچ گئی۔ فورسز اور پولیس نے درجنوں ریلیوں اور جلوسوں کو منتشر کیا جبکہ آنسو گیس اور پیلٹ بندوقوں کے دہانے کھولے گئے جن میں150 سے زائد افراد زخمی ہوئے جن میں سے نصف درجن مظاہرین کی حالات نازک بتائی جاتی ہے۔عینی شاہدین کے مطابق جنوبی ضلع پلوامہ میں مقامی طور پر چھو چلو کی کال دی گئی تھی اس مناسبت سے مقامی اوقاف کمیٹی نے مقامی فروٹ منڈ ی میں ایک عوامی جلسے کا اہتمام کیا تھا،تاہم فوج، فورسز اور پولیس نے شبانہ چھاپہ مار کاروائی کے دوران جائے تقریب کو تہس نس کیا جس کو مقامی لوگوں نے دن بھر محنت کر کے بنا دیا تھا۔ سحر سے قبل فوج کی 55 آ ر آر ، ایس اؤ جی پلوامہ اور182 بٹا لین سی آ ر پی ایف نے علاقہ کا محا صر ہ کیا جس کے دوران وہاں سجائے گئے اسٹیج کو اکھاڈ پھینکا ۔معلوم ہوا ہے کہ اس دوران قریب رات کے3بجے یہ خبر پورے علاقے اور آس پاس کے علاقوں میں جنگل کے آگ کی طرح پھیل گئی جبکہ مقامی مساجد سے لوڑ اسپیکروں پر اعلان کیا گیا۔اس دوران لوگوں نے گھروں سے باہر آنا شروع کردیا۔اس دوران لوگوں نے فوج اور فورسز کی اس کاروائی کے خلاف احتجاج کیا جبکہ مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے فورسز اور پولیس نے پیلٹ بندوقوں کے دہانے کھول دئیے ۔

مزید :

صفحہ آخر -