پوزیشن ہولڈر طلبہ بارے انتہائی رازداری ‘ وائس چانسلر کو بھی لاعلم رکھا گیا

پوزیشن ہولڈر طلبہ بارے انتہائی رازداری ‘ وائس چانسلر کو بھی لاعلم رکھا گیا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


ملتان( سٹاف رپورٹر) بی اے ‘ بی ایس سی کی پوز یشنیں 24اگست کو رات گئے فائنل ہوئیں ‘کنٹرولر امتحانات پروفیسر ڈ اکٹر محمد مطاہر نے کہا کہ پوزیشن ہولڈرز کا وائس چانسلر کو بھی پتہ نہیں تھا‘ یہ بس ان کے علاوہ ڈپٹی کنٹرولر اور اسسٹنٹ کنٹرولر کے علم میں تھا‘ اگر کسی نے قبل از وقت ہی پوزیشنز کا اعلان کیا تو غلط ہونے کی صورت میں وہ لوگ خود ذمہ دار ہو نگے۔زکریا یونیورسٹی کے وائس چانسلر (بقیہ نمبر9صفحہ12پر )
پروفیسر ڈاکٹر طاہر امین بی اے ‘ بی ایس سی کے رزلٹ کی تقریب میں شرکت نہ کر سکے ‘شرکا سوا بارہ بجے تک انتظار کرتے رہے لیکن وہ نہ آئے‘ بتایا گیا کہ وہ ضروری کام سے گئے ہیں ‘اس لئے ان کی جگہ قائم مقام وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر روبینہ ترین تقریب میں مہمان خصوصی ہو نگی۔ملتان سمیت 10اضلاع کے تمام سرکاری بوائز کالجز کی کارکردگی مایوس کن رہی‘ بی اے ‘بی ایس سی کے امتحانات میں زکریا یونیورسٹی کے تحت ملتان‘ ڈیرہ غازی خان ‘ لیہ ‘ خانیوال ‘ لودھراں‘ مظفر گڑھ‘ پاکپتن ‘ راجن پور‘ ساہیوال ‘ وہاڑی کے سرکاری بوائز کالجز ناکام ہو گئے اور کوئی پوزیشن نہ لے سکے ‘ملتان میں بڑے نا م والے سرکاری کالجز سمیت تمام کالجز رہ گئے اور کوئی ایک پوزیشن بھی نہ لے سکے جس پر ماہرین تعلیم نے شدید تنقید کی ہے اور کہا ہے کہ حکومت پنجاب سرکاری کالجز پر اربوں روپے خرچ کرتی ہے لیکن ملتان سمیت 10اضلاع میں کو ئی ایک پوزیشن بھی نہ لینا لمحہ فکریہ ہے ‘حکومت پنجاب سکولوں کے پیچھے ہاتھ دھو کر پڑی ہوئی ہے ‘ بوائز سرکاری کالجز پر بھی توجہ دینا چاہئیے ۔بی اے ،بی ایس سی کے سالانہ امتحان میں سب سے زیا دہ امیدوار انگریزی میں فیل ہوئے جبکہ سب سے زیادہ پاس پاکستان سٹڈی میں ہوئے بی اے انگلش میں 29ہزار278 امیدوار شریک ہوئے جس میں سے 7ہزار 479پاس ہوئے جبکہ بی ایس سی میں 14ہزار802امیدوار شریک ہوئے جس میں سے دس ہزار 310 پاس ہوئے انگلش لٹریچر میں 64امیدوار شریک ہوئے جس میں سے 17پاس ہوئے جبکہ سب سے زیا دہ امیدوار مطالعہ پاکستان کے پرچے میں شریک ہوئے جس میں 29ہزار963پاس ہوئے ۔بی اے بی ایس سی کے سالانہ امتحان میں پنجاب کالج چھا گیا ، پرائیویٹ کالجز میں تین پوزیشنیں حاصل کرلیں‘ جاری ہونے والے اعداد وشمار کے مطابق پنجاب کالج میں دو پوزیشنو ں کے ساتھ کامیابی کی شرح 76.23فیصد رہی، پنجاب کالج ساہیوال کی ایک پوزیشن کے ساتھ کامیابی کی شرح 77.85فیصد رہی ، پنجاب کالج بوریوالا کے طلبا کی کامیابی کی شرح 88.52فیصد رہی ، پنجاب کالج میاں چنوں کی کامیابی کی شرح 84.38رہی ، پنجاب کالج خانیوال کی کامیابی کی شرح 94.23فیصد رہی جبکہ پنجاب کالج جہانیاں کی کامیابی کی شرح 83.33فیصد رہی۔
رازداری