ضمنی الیکشن صوبائی حلقہ 232 ‘ امیدواروں کیلئے ضابطہ اخلاق جاری کردیا گیا

ضمنی الیکشن صوبائی حلقہ 232 ‘ امیدواروں کیلئے ضابطہ اخلاق جاری کردیا گیا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


بورے والا(تحصیل رپورٹر)صوبائی حلقہ پی پی232میں 31اگست کو ہونے والے ضمنی الیکشن کے پرامن انعقاد اورامیدواروں کو ضابطہ اخلاق کی پابندی کروانے کے لئے ضلعی انتظامی افسران اورامیدواران کا مشترکہ اجلاس۔اسسٹنٹ الیکشن کمیشن پنجاب چوہدری مسرور احمدبجاڑ کی (بقیہ نمبر29صفحہ12پر )
زیرصدارت ٹی ایم اے ہال میں منعقدہوا اجلاس میں ڈی سی اووہاڑی علی اکبربھٹی ڈی پی او چوہدری محمدسلیم ڈسٹرکٹ ریٹرننگ آفیسر عامرجاوید اسسٹنٹ ریٹرننگ آفیسر اسسٹنٹ کمشنر احمرسہیل کیفی ڈی ایس پی مہرذوالفقارعلی سندرانہ امیدوار مسلم لیگ ن چوہدری محمدیوسف کسیلیہ پی ٹی آئی کی امیدوار عائشہ نذیرجٹ مرزامحبوب ربانی اور ملک راشد فرازنے شرکت کی اسسٹنٹ الیکشن کمشنر پنجاب نے خطاب کرتے ہوئے امیدواروں کوہدایت کی کہ وہ اپنے انتخابی کیمپ پولنگ اسٹیشن سے چارسوگز کے فاصلے سے دورلگائیں کسی بھی پارٹی کے امیدوار کے پولنگ ایجنٹ کو موبائل فون اندر لے جانے کی ہرگز اجازت نہیں ہوگی انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن کے ضابطہ اخلاق کے تحت ترقیاتی کاموں کی تشہیر کی اجازت نہیں ہوگی ۔ انتخابی مہم مقررہ وقت کے بعد چلانے کی اجازت نہیں ہوگی الیکشن کمیشن کے طے شدہ انتخابی بینرزاورپینافلیکس کے سائز کے برعکس بڑے بڑے پینافلیکس آج ہی رات تک اتاردئیے جائیں وگرنہ ٹی ایم اے انہیں اتارلے گی اور اس کے ذمہ دار امیدوار کے خلاف ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کی کاروائی ہوگی انہوں نے مزید کہا کہ کسی بھی ووٹرکو صرف ایک دفعہ پولنگ اسٹیشن کے اندرجاکر اپنا ووٹ ڈالنے کی اجازت ہوگی بالخصوص خواتین کے پولنگ اسٹیشنو ں پر کسی بھی مردحضرات کاداخلہ سختی سے منع ہے انہوں نے کہا کہ کسی بھی سرکاری مشیراورمنتخب ارکان پارلیمنٹ کوانتخابی مہم چلانے کی اجازت نہیں ہے انہوں نے پی ٹی آئی کی نامزدامیدوارعائشہ نذیرجٹ کو انتباہ کیاکہ ان کی انتخابی مہم کے سلسلہ میں تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان یادیگر کسی لیڈر کوحلقہ232میں عوامی جلسے کی اجازت نہیں ہے خلاف ورزی پرالیکشن کمیشن اپناقانونی اختیار استعمال کرے گا علاوہ ازیں اسلحہ کی نمائش اور انتخابی نتائج کے بعدکامیابی کی خوشی میں فائرنگ آتشبازی کی پابندی سختی سے کروائی جائے گی پی ٹی آئی کی امیدوار عائشہ نذیرجٹ نے کہا کہ حکومتی امیدوارکی کامیابی کے لئے حکومتی مشینری استعمال کی جارہی ہے اورسرکاری افسروں کے ذریعہ ووٹرز کی ہمدردیاں حاصل کی جارہی ہے مسلم لیگ ن کے امیدوار چوہدری یوسف کسیلیہ نے کہا کہ سابق ایم این اے چوہدری نذیرجٹ نے اپنی بیٹی کی کامیابی کے لئے چک307ای بی کی اضافی بستیوں کے300شناختی کارڈ خریدے ہیں اورغیرشائستہ زبان جلسوں میں استعمال کی جارہی ہے جبکہ انہوں نے ووٹرز کو مائل کرنے کے لئے اپنی ذاتی حیثیت سے بجلی کے ٹرانس فارمرز خرید رکھے ہیں جوکہ ضابطہ اخلاق کی صریحاً خلاف ورزی ہے ڈی سی او علی اکبربھٹی اور ڈی پی او چوہدری محمدسلیم نے کہا کہ امیدواروں کو چار دیوار ی کے اندر اجازت لے کر جلسے کرنے کی اجازت ہے اوروہ پرامن ریلیاں بھی نکال سکتے ہیں انتظامیہ کی طرف سے انہیں سیکیورٹی مہیا کی جائے گی جبکہ پولنگ کے روز امن و امان کو یقینی بنانے کے لئے مسلح افواج کی خدمات بھی حاصل کی گئی ہیں انہوں نے کہا کہ حکومت کی طرف سے سیکیورٹی کی مانیٹرنگ کے لئے خودکار کیمروں والی گاڑیاں فراہم کی جارہی ہیں جوکسی بھی پولنگ اسٹیشن پرہونے والے ناخوشگوار واقعہ کی ویڈیوتیارکرکے انتظامیہ کو مہیاکریں گی۔