روس کے ہزاروں فوجی میدان میں آگئے، ایسی جگہ پڑاﺅ ڈال دیا کہ کھل کر امریکہ کو للکار دیا، تصادم کا بڑا خطرہ!

روس کے ہزاروں فوجی میدان میں آگئے، ایسی جگہ پڑاﺅ ڈال دیا کہ کھل کر امریکہ کو ...
روس کے ہزاروں فوجی میدان میں آگئے، ایسی جگہ پڑاﺅ ڈال دیا کہ کھل کر امریکہ کو للکار دیا، تصادم کا بڑا خطرہ!

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

ماسکو (نیوز ڈیسک) روس نے امریکہ، برطانیہ اور نیٹو کے ساتھ ممکنہ جنگ کی تیاریوں کو آخری مرحلے میں لے جاتے ہوئے اپنی تاریخ کی سب سے بڑی جنگی مشقوں کا آغاز کردیاہے، جس کے دوران روسی آرمی، ائیرفورس، ہوائی دستے اور بحریہ کا شمالی بیڑہ یورپ کی سرحد پر اپنی پوری قوت کے ساتھ موجود ہو گا۔
اخبار ڈیلی سٹار کی رپورٹ کے مطابق روس کی جانب سے اس غیر معمولی فیصلے کی وجہ اس کی مغربی سرحد کے قریب نیٹو کی افواج کا جمع ہونا ہے۔ روسی وزیر دفاع سرگئی شوئیگو کو کہنا تھا کہ یہ جنگی مشقیں روسی فیڈریشن کی سلامتی کو لاحق خطرات کے پیش نظر کی جارہی ہیں۔ گزشتہ روز شروع ہونے والی یہ مشقیں اس ماہ کے آخر تک جاری رہیں گی جن کے دوران آرمی یونٹ حقیقی جنگ جیسے ماحول میں اصلی ہتھیار استعمال کریں گے۔

روسی صدر پیوٹن نے حکم دے دیا، روسی ٹینک بحری جہاز پر لادے جانے لگے ، اب کس ملک کو نشانہ بنانے کی تیاری ہے؟ سب سے پریشان کن خبر آگئی
واضح رہے کہ روس اپنے ہزاروں فوجی اور سینکڑوں ٹینک اس سے پہلے ہی سرحد پر پہنچاچکا ہے، اور مغربی میڈیا تو یہ بھی کہہ رہا ہے کہ روس نے اپنے بھاری ہتھیار اور افواج کرائیمیا میں داخل کردئیے ہیں جہاں سے یوکرین پر کسی بھی وقت حملہ ہوسکتا ہے۔ اس سے پہلے یوکرین کے صدر پیٹروپوروشینکو کہہ چکے ہیں کہ روسی فوج کسی بھی وقت ان کے ملک میں داخل ہوسکتی ہے۔

دفاعی ماہرین کا کہنا ہے کہ روس کے حملے کا آغاز ہونے کے بعد تقریباً تین دن کے دوران یہ مشرقی یورپ کو روندتا ہوا یورپ کے وسط تک پہنچ جائے گا، جبکہ دوسری جانب یورپی حکام بھی دھمکی دے رہے ہیں کہ روس کے یوکرین میں داخل ہوتے ہی نیٹو افواج بھی حرکت میں آجائیں گی اور کھلی جنگ کا آغاز ہوجائے گا۔