’’گستاخانہ خاکوں کی ناپاک جسارت ،آزادی اظہار رائے نہیں ‘‘ ایک ارب مسلمانوں کے جذبات سے کھیلنے والے کیا چاہتے ہیں؟

Aug 26, 2018 | 19:05:PM

ہالینڈ میں رکن پارلیمنٹ اور پارٹی فار فریڈم کے سربراہ ملعون گیرٹ ولڈرز نے ایک بار پھر خبث باطن کا مظاہرہ کرتے ہوئے حرمت رسولﷺ پہ حملہ آور ہونے کی ناپاک جسارت کی ہے۔ اس نے ڈچ پارلیمنٹ میں گستاخانہ خاکوں کا مقابلہ منعقد کروانے کا اعلان کیا ہے جس کی اجازت ہالینڈ کے قومی سلامتی کے محکمے اور محکمہ انسداد دہشت گردی کے ڈچ کوآرڈینیٹر نے دے دی ہے۔یہ ان ملعونوں کے لیے معمولی بات ہوگی لیکن آقاﷺ کے غلاموں کے لیے یہ جینے مرنے کا مقام ہے،شائد وہ جانتے نہیں کہ مسلمان چاہے جتنے بھی فرقوں میں بٹ جائیں لیکن ان سب مسلمانوں کی نسبت نبی مکرمﷺ کی ذات اقدس سے ہے، جس کے لیے وہ کٹ بھی سکتے ہیں اور مر بھی سکتے ہیں اور یہی تو ایک واحد نسبت ہے جسے مسلمان کبھی بھی ضائع نہیں کرسکتا ، اس نسبت پہ ایک مسلمان دنیا جہاں کی نسبتیں قربان کرسکتا ہے۔یہ ایک عالمگیر اور کائناتی حقیقت ہے کہ نبی اکرم ﷺ  کی محبت ہی ہمارے مسلمانوں کی روح جاوداں ہے جس کی بدولت ساری دنیا کے مسلمان جسد واحد کی مانند ہیں اور جب حرمت رسولﷺ پر کوئی گستاخی کی جسارت کرتا ہے تو عالم اسلام کی روح بے چین و بے قرار ہوجاتی ہے اور کسی پل چین نہیں پاتی ۔توہین رسالت کے واقعات کوئی نئی بات نہیں ، ایسے واقعات کا آغاز تو رسالت مآبﷺ کے زمانے سے ہوگیا تھالیکن فی زمانہ نائن الیون کے بعد سے ایسے واقعات کا سلسلہ تیزی سے شروع ہوگیا ہے ، ستم ظریفی یہ ہے کہ انہیں “آزادی اظہاررائے” کے خوبصورت لبادے میں ڈھانپ کر پیش کیا جاتا ہے۔ حالانکہ دیکھا جائے تو یہ ”آزادی اظہاررائے“ نہیں بلکہ”آزادی آزار“ ہے جس میں اپنی شیطانی جبلت کی تسکین کے لئے ایک ارب سے زائد مسلمانوں کے جذبات سے کھیلا جا رہا ہے۔۔

۔۔۔ویڈیو دیکھیں۔۔۔

مزیدخبریں