اسلام آباد میں پولیس اہلکاروں کا قتل، ناکوں پر مورچے بنانے اور اہلکاروں کو بلٹ پروف جیکٹس دینے کا فیصلہ

اسلام آباد میں پولیس اہلکاروں کا قتل، ناکوں پر مورچے بنانے اور اہلکاروں کو ...
اسلام آباد میں پولیس اہلکاروں کا قتل، ناکوں پر مورچے بنانے اور اہلکاروں کو بلٹ پروف جیکٹس دینے کا فیصلہ

  


اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) اسلام آباد میں پولیس چوکی پر فائرنگ سے 2 اہلکاروں کی شہادت کے معاملے پر آئی جی اسلام آباد نے تفتیش کے لیے جے آئی ٹی تشکیل دے دی ہے,ناکوں پر مورچے بنانے اور اہلکاروں کو بلٹ پروف جیکٹس دینے کا بھی فیصلہ کرلیا گیا ہے،ڈیوٹی پر 3 کے بجائے 5 اہلکار تعینات ہوں گے۔

اسلام آباد میں 2 روز قبل فائرنگ سے 2 پولیس اہلکاروں کی شہادت کا افسوس ناک واقعہ پیش آیا تھا۔ وفاقی پولیس نے اہلکاروں کی حفاظت کے لئے فیصلہ کیا ہے کہ ہر ناکے پر مورچے بنائے جائیں گے،3 کے جگہ اب 5 اہلکار12 گھنٹے کے بجائے صرف 8 گھنٹے ڈیوٹی دیں گے، فیصلے کے تحت ہراہلکار کو بلٹ پروف جیکٹ اور ہیلمٹ بھی فراہم کیا جائے گا۔ ناکوں پر بیرئیرز میں بھی اضافہ کردیا گیا ہے اور ہر ناکے پر 2 ایس ایم جی جبکہ 2 نائن ایم ایم پسٹل ہوں گے۔آئی جی اسلام آباد نے فائرنگ کے واقعے کی تحقیقات کے لیے سی ٹی پی کے ایس ایس پی سید امین بخاری کی سربراہی میں جے آئی ٹی تشکیل دے دی ہے۔ کمیٹی میں ایس پی مصطفی تنویر، ایس پی زبیر شیخ، صاعد عزیز اور ڈی ایس پی حاکم سمیت حساس اداروں کے افسران شامل ہوں گے۔ کمیٹی 45 دنوں میں اپنی رپورٹ آئی جی اسلام آباد کو جمع کروائے گی.

مزید : علاقائی /اسلام آباد


loading...