مکان ہتھیانے کا الزام، ساندہ پولیس کا نوجوان پر نجی ٹارچر سیل میں تشدد

مکان ہتھیانے کا الزام، ساندہ پولیس کا نوجوان پر نجی ٹارچر سیل میں تشدد

  

لاہور(کرائم رپورٹر) سابق پولیس ملازم اور ایس ایچ او ساندہ کا مکان ہتھیانے کے لیے 30سالہ شخص پرنجی ٹارچر سیل میں بدترین تشدد، مکان لکھ کر نہ دینے پر جھوٹا مقدمہ درج کر ڈالا، آئی جی پنجاب سے انصاف کی دہائی  تفصیلات کے مطابق ساندہ پولیس کا نجی ٹارچل سیل میں بے گناہ یتیم عاکف نامی نوجوان کو بدترین تشدد کا نشانہ بنایا گیا عاکف کا کہنا ہے کہ سب انسپکٹر، TASI ،2کانسٹیبلوں نے اس پر دو دن حبس بے جا میں رکھ کر تشدد کیا اورمکان لکھ کر نا دینے پر جھوٹا مقدمہ بھی درج کر دیا برخاست پولیس ملازم ارشد جٹ والدہ کے مکان پر قبضہ کرنا چاہتا ہے مکان ارشد جٹ کو نہیں دیااسی رنجش میں ارشد جٹ نے خود بھی تشدد کیا گیا،ارشد جٹ خود کوایس ایچ او کا بہنوئی ظاہر کرتا ہے،عاکف کی والدہ نے دہائی دیتے ہوئے کہا کہ میری وزیر اعلی عثمان بزدار اور آئی جی پنجاب سے انصاف کی درخواست ہے۔

مزید :

علاقائی -