پشاور ہائیکورٹ کا  آٹے اور چینی کی بڑھتی ہوئی قیمتوں پر اظہار برہمی

پشاور ہائیکورٹ کا  آٹے اور چینی کی بڑھتی ہوئی قیمتوں پر اظہار برہمی

  

پشاور(نیوزرپورٹر)پشاور ہائیکورٹ نے آٹے اور چینی کی بڑھتی ہوئی قیمتوں پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے صوبائی وزیرخوراک، سیکرٹری فوڈ اور ڈی سی پشاور کو آج طلب کرلیا  جبکہ جسٹس قیصر رشید نے ریمارکس دیئے ہیں کہ حکومت کر کیا رہی ہے، آٹا اور چینی کی قیمتوں میں اضافہ ہورہا ہے کسی کو پرواہ تک نہیں ہے  ایک روٹی کی قیمت 20 روپے تک پہنچ گئی ہے شوگر بحران میں جو ملوث تھے ان کو حکومت نے کلین چٹ دے دی۔ وہ بڑے مگر مچھ کہا ں چلے گئے عوام کو ریلیف فراہم کرنا حکومت کا کام ہے مگر حکومت ٹس سے مس نہیں ہورہی اٹے کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کے خلاف دائر درخواست پر کیس کی سماعت جسٹس قیصر رشید اور جسٹس اعجاز انور پر مشتمل دو رکنی بینچ نے کی ایڈوکیٹ جنرل خیبر پختون خوا شمائل احمد بٹ عدالت میں پیش ہوئے درخواست گزار فلورملز ایسوسی ایشن کے وکیل تیمورعلی شاہ ایڈوکیٹ نے عدالت کو بتایا کہ صوبائی حکومت نے پنجاب کی پالیسی اپنائی ہے جس  سے فلورملز ایسوسی ایشن کا نقصان ہے ہمیں پنجاب سے 150 روپے مہنگا گندم مل رہا ہے ہم کیسے اسی قیمت پر آٹا فروخت کریں  20 کلو اٹے کی قیمت 800 روپے سے بڑھ کر 14 سو روپے تک پہنچ گئی ہے اور سرکاری ریٹ پر جو اٹا مل رہا ہے اس کی کوالٹی ٹھیک نہیں ہے کے پی کو پنجاب سے 150 روپے مہنگا گندم مل رہا ہے جسٹس قیصر رشید نے ایڈوکیٹ جنرل کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ اے جی صاحب یہ کیا ہورہا ہے عام آدمی کو 20 روپے کی روٹی مل رہی ہے، چینی کا بھی بحران ہے یہ کیا ہورہا ہے  شوگر بحران میں جو ملوث تھے ان کو حکومت نے کلین چٹ دے دی، وہ بڑے مگر مچھ کہا چلے گئے  جہاں ضروت نہیں حکومت وہاں پر پیسے خرچ کررہی ہے  آٹا اور چینی کی قیمتوں میں اضافہ ہورہا ہے کسی کو پرواہ نہیں ہے سرکاری ریٹ پر جو آٹا مل رہا ہے وہ چوکر ہے آٹا نہیں میں نے خود مارکیٹ میں جاکر دیکھا ہے جس پر ایڈوکیٹ جنرل خیبر پختون خوا شمائل احمد بٹ نے عدالت کو بتایا کہ ہماری تو صرف 6 شوگر ملز ہے باقی ہماری نہیں ہیں جسٹس قیصر رشید نے اے جی کو کہا کہ صوبے اور وفاق دونوں میں آپ کی حکومت ہے عوام کو ریلیف فراہم کرنا حکومت کی زمہ داری ہے عوام آٹے کیلئے رل رہے ہیں مگر کسی کو پرواہ ہی نہیں فاضل بینچ نے نے صوبائی وزیرخوراک، سیکرٹری فوڈ اور ڈی سی پشاور کو اج طلب کرتے ہوئے کیس کی سماعت ملتوی کردی

مزید :

پشاورصفحہ آخر -