رجسٹرار سے دائر رٹ پٹیشن پر یونیورسٹی انتظامیہ سے جواب طلب 

رجسٹرار سے دائر رٹ پٹیشن پر یونیورسٹی انتظامیہ سے جواب طلب 

  

پشاور(نیوز رپورٹر) پشاورہائیکورٹ نے یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی پشاور کے رجسٹرار سے ایچ آر کے اختیارات لینے کیخلاف دائر رٹ پٹیشن پر یونیورسٹی انتظامیہ سے 10روز میں جواب طلب کرلیا۔ جسٹس قیصر رشید اور جسٹس اعجازانورپرمشتمل دورکنی بنچ نے قاضی واجد احسان اللہ ایڈوکیٹ کی وساطت سے دائر یوای ٹی کے رجسٹرارڈاکٹر خضراعظم کی رٹ پر سماعت کی دوران سماعت یونیورسٹی سے سینئروکیل میاں محب اللہ کاکاخیل بھی عدالت کے روبروپیش ہوئے۔ درخواست گزار کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ یونیورسٹی نے احکامات جاری کرکے رجسٹرارسے ہیومن ریسورسز کے اختیارات لے لئے ہیں جبکہ اسے ایڈیشنل رجسٹرار کو حوالے کردیئے جو غیرقانونی ہے انہوں نے عدالت سے اس حکمنامے کو معطل کرنے کی استدعا کی۔ دوران سماعت میاں محب کاکاخیل ایڈوکیٹ نے دلائل دیئے کہ اختیارات یونیورسٹی سینڈیکیٹ کیجانب سے بنائی گئی کمیٹی کی سفارش پر لئے گئے ہیں کیونکہ یونیورسٹی امور متاثر ہورہے تھے انہوں نے کہا کہ درخواست گزارکے پاس سینڈیکیٹ کو اپیل کرنیکا اختیار حاصل ہے۔عدالت نے قراردیا کہ وائس چانسلر کے پاس اختیارات موجود ہوتے ہیں،اگر سیشن جج سے کوئی اختیارلیکرایڈیشنل سیشن جج کو دیئے جائیں توکیا وہ بھی عدالت سے رجوع کرینگے؟ اس موقع پر درخواست گزارنے بتایا کہ یونیورسٹی نے انہیں ایک گھنٹہ عدالت میں گزارنے پرشوکاز نوٹس جاری کیا ہے جس پر یونیورسٹی وکیل نے کہا کہ شوکاز نوٹس واپس لے لیتے ہیں اس بابت درخواست گزار کیخلاف کوئی کارروائی نہیں کی جائیگی اور اسے چھٹی میں تبدیل کردیاجائے گا۔ عدالت نے دلائل مکمل ہونے پر یونیورسٹی انتظامیہ سے جواب طلب کرلیا ہے۔ یف

مزید :

پشاورصفحہ آخر -