25اگست،،، نامور شاعر احمد فراز کی برسی۔ (یوم پیدائش 12 جنوری، 1931ء، تاریخ وفات:25اگست 2008)

25اگست،،، نامور شاعر احمد فراز کی برسی۔ (یوم پیدائش 12 جنوری، 1931ء، تاریخ ...
25اگست،،، نامور شاعر احمد فراز کی برسی۔ (یوم پیدائش 12 جنوری، 1931ء، تاریخ وفات:25اگست 2008)

  

آنکھ سے دور نہ ہو دل سے اتر جائے گا

وقت کا کیا ہے گزرتا ہے گزر جائے گا

اتنا مانوس نہ ہو خلوتِ غم سے اپنی

تو کبھی خود کو بھی دیکھے گا تو مر جائے گا

ڈوبتے ڈوبتے کشتی کو اُچُھالا دے دوں

میں نہیں کوئی تو ساحل پہ اتر جائے گا

زندگی تیری  عطا ہے تو یہ جانے والا

تیری بخشش تری دہلیز پہ دھر جائے گا

ضبط لازم ہے مگر دکھ ہے قیامت کا فراز

ظالم اب کے بھی نہ روئے گا تو مر جائے گا

شاعر : احمد فراز

                                          Aankh Say Door Na Ho Dil Say Utar Jaaey Ga

                                        Waqt Ka Kia Hay  Guzarta Hay Guzar Jaaey Ga

                                        Itna Manoos Na Ho Khalwat  e  Gham Say Apni

                   Too Kabhi Khud Ko Bhi Dekhay Ga To Mar Jaaey Ga

                                              Doobtay Doobtay Kashti Ko Uchaala Day Do

                                                      Main Nahen Koi To Saahil Pe Utar Jaaey Ga

                                                      Zindagi Teri Ataa Hay To Yeh Jaanay Waala

                                           Teri Bakhshish Teri Dwhleez Pe Dhar Jaaey Ga

Zabt Laazim Hay Magar Dukh Hay Qayaamat Ka FARAZ

                                      Zaalim Ab K Bhi NA Roey Ga To MAr Jaaey Ga

                                                                                                                                                 Poet: Ahmad Faraz

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -سنجیدہ شاعری -