عالمی بینک کاخیبرپختونخوا میں توانائی کے شعبے کی ترقی کے لئے450ملین ڈالرزکی مالی معاونت کی فراہمی پر اتفاق 

عالمی بینک کاخیبرپختونخوا میں توانائی کے شعبے کی ترقی کے لئے450ملین ڈالرزکی ...
عالمی بینک کاخیبرپختونخوا میں توانائی کے شعبے کی ترقی کے لئے450ملین ڈالرزکی مالی معاونت کی فراہمی پر اتفاق 

  

پشاور(آئی این پی)عالمی بینک نے خیبرپختونخوا میں توانائی کے شعبے کی ترقی کے لئے450ملین ڈالرزکی مالی معاونت کی فراہمی پر اتفاق کرتے ہوئے ضلع سوات میں پن بجلی کے 2منصوبے شروع کرنے کا فیصلہ کیاہے جن سے  مجموعی طورپر245میگاواٹ بجلی پیداکی جائے گی،توانائی کے ان منصوبوں سے ایک طرف صوبے میں بڑی سرمایہ کاری آئے گی تودوسری طرف روزگارکے نئے مواقع میسرآئیں گے ،ان منصوبوں کی تکمیل سے صوبے کوسالانہ اربوں روپے کی آمدن بھی ہوگی جبکہ صوبے میں توانائی کے شعبے سے وابستہ اداروں کے استحکام سمیت ہائیڈرو اورسولرکے شعبوں میں دستیاب وسائل کوبروئے کارلانے کیلئے منصوبوں کی فزیبلٹی سٹڈیزاورپلان مرتب کئے جائیں گے۔

اس سلسلے میں عالمی بینک کے سینئرانرجی سپیشلسٹ محمدثاقب کی سربراہی میں عالمی بینک کے مشن نے مشیرتوانائی خیبر پختو نخواحمایت اللہ خان سے ایک اعلیٰ سطحی اجلاس منعقدکیا۔اجلاس میں سیکرٹری توانائی محمدزبیرخان،چیف ایگزیکٹوپیڈوانجینئرنعیم خان،ورلڈبینک توانائی منصوبوں کے فوکل پرسن انجینئرمحمدفراز،پراجیکٹ ڈائریکٹرگبرال پاورپراجیکٹ سیدعزیزاحمدسمیت اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔ اجلاس میں بتایا گیاکہ عالمی بینک نے خیبرپختونخوامیں ہائیڈرو رنیوایبل انرجی ڈویلپمنٹ پروگرام کے تحت  دیگر عالمی مالیاتی اداروں آئی ڈی اے اور آئی بی آر ڈی اورکے تعاون سے مجموعی طورپر786ملین ڈالرزکامالیاتی پیکج  تیارکیا ہے جس میں ضلع سوات میں پن بجلی کے 2منصوبو ں گبرال کالام ہائیڈروپاورپراجیکٹ88میگاواٹ اورمدین ہائیڈروپاورپراجیکٹ157میگاواٹ کی تعمیر،پن بجلی اورشمسی توانائی کے نئے پراجیکٹس کی فزیبلٹی وڈیزائن سٹڈیزکی تیاری سمیت صوبے میں ادارہ جاتی استحکام کاپروگرام ترتیب دیاگیاہے۔

اجلاس میں طویل بحث ومباحثے کے بعد عالمی بینک کی جانب سے توانائی کے اس پروگرام کے لئے450ملین ڈالرزکی مالی معاونت کی فراہمی پر اتفاق کیا گیااوراس سلسلے میں عالمی بینک کے آئندہ بورڈآف ڈائریکٹرزکے اجلاس سے حتمی منظوری لی جائے گی۔اجلاس میں مشیر توانائی حمایت اللہ خان نے عالمی مالیاتی اداروں کی جانب سے صوبے میں توانائی کے منصوبے شروع کرنے میں مالی معاونت کی فراہمی کو خوش آئندقراردیتے ہوئے کہا کہ ان اقدامات سے ایک طرف صوبے کی معیشت کواستحکام ملے گااوردوسری جانب روزگارکے نئے مواقع بھی میسرہونگے۔

مزید :

علاقائی -خیبرپختون خواہ -پشاور -