ایران پاکستان گیس پائپ لائن منصوبہ عالمی پابندیوں کا شکار ہے

ایران پاکستان گیس پائپ لائن منصوبہ عالمی پابندیوں کا شکار ہے

  



سلام آباد(آئی اےن پی)وفاقی وزیر پیٹرولیم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ ملک میں گیس کی کمی ہے۔ایران پاکستان گیس پائپ لائن منصوبہ بین الااقوامی پابندیوں کا شکار ہے، حکومت کے پانچ سال پورے ہونے تک ملک میں اضافی گیس دستیاب ہو گی۔ایک انٹروےو میں شاہد خاقان عباسی کا کہنا ہے کہ گزشتہ پندرہ سال سے ملک گیس کی کمی کا شکا ر ہے۔گیس کی کمی دور کرنے کے لیے ایل این جی، تاجکستان اور ایران گیس پائپ لائن منصوبوں کی راہ میں حائل مسائل کو حل کیا جارہا ہے۔ اور دو ہزار سترہ تک ایل این جی کی پہلی کھیپ پاکستان آ جائے گی۔شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ ملک کی مالی حالت بہتر ہو جائے تو آئندہ تین سال میں دو بلین کیوبک فت گیس سسٹم میں آجائے گی۔شاہد خاقان عباسی نے بتایا کہ گیس کی کمی کو پورا کرنے کے لیے لوڈ شیڈنگ کی جاتی ہے سندھ میں سی این تین سے چار دن اور پنجاب میں ڈھائی ماہ تک بند کی جائے گی اور بلوچستان میں سی این جی کی لوڈ شیڈنگ نہیں کی جائے گا۔

مزید : کامرس


loading...