قائد اعظم کے پاکستان کو اشرافیہ نے اپنی جاگیر بنا لیا : سراج الحق

قائد اعظم کے پاکستان کو اشرافیہ نے اپنی جاگیر بنا لیا : سراج الحق

  

لاہور(صباح نیوز) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ قائداعظم کے وژن پر عمل کیے بغیر پاکستان ترقی نہیں کر سکتا ۔ پاکستان کو قائداعظم کے اصولوں اور فرمان کے مطابق چلانے کی راہ میں حکمران سب سے بڑی رکاوٹ ہیں ۔ ملکی تاریخ کے ستر سال محرومیوں اور مجبوریوں کی ناقابل فراموش داستان ہیں ۔ قائداعظم پاکستان کو اسلامی و فلاحی اور دنیا کے لیے ایک مثالی ملک بنانا چاہتے تھے ۔ تحریک پاکستان میں مسلمانان ہند نے رنگ و نسل ، برادری اور مسلکوں سے بالاتر ہو کر حصہ لیا ۔ لاکھوں جانیں قربان کرنے کے بعد حاصل کیے گئے پاکستان کو انگریز کے پروردہ جاگیرداروں اور سرمایہ داروں نے عوام کے لیے ایک بڑی جیل میں تبدیل کردیاہے ۔ قائداعظم کے پاکستان کو اشرافیہ نے اپنی جاگیر بنالیاہے ۔ عوام کے حقوق غصب کرنے والے عوامی نمائندے نہیں غاصبوں کا ٹولہ ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے منصورہ میں مختلف وفود سے ملاقاتوں کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ سینیٹرسراج الحق نے کہاکہ بابائے قوم کو خراج عقیدت پیش کرنے کا بہترین طریقہ ان کے فرمان کے مطابق پاکستان کی تعمیر ہے ۔ قائداعظم نے پور ی زندگی میں اپنے اصولوں سے انحراف نہیں کیا وہ پاکستان میں عدل و انصاف پر مبنی آئین کی بالادستی کا نظام چاہتے تھے ۔ قائداعظم نے قرآن کو پاکستان کا دستور قرار دیا اور کہاکہ ہمارا مقصد محض زمین کا ایک ٹکڑا حاصل کرنا نہیں ، بلکہ ہم پاکستان میں اسلامی نظام حکومت کا نفاذ اور پاکستان کو اسلام کی تجربہ گاہ بنانا چاہتے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ موجودہ حکمران قطعاً عوام کی نمائندگی کا دعویٰ نہیں کرسکتے ۔ عوام بجاطور پر حکمرانوں کو ہی اپنے تمام مسائل کا ذمہ دار سمجھتے ہیں ۔ حکمرانوں نے اپنی نااہلی اور کرپشن سے عوام کو بنیادی ضروریات زندگی سے محروم کر رکھاہے ۔ عوام کی نمائندگی اور مینڈیٹ کے دعوے دار خود عالی شان محلوں میں رہتے ہیں ان کے بچے بیرون ملک پڑھتے ہیں اور ان کا علاج بھی لندن اور امریکہ کے ہسپتالوں میں ہوتاہے ۔ حکمرانوں کے بینک اکاؤنٹس اور کاروبار پاکستان سے باہر ہیں ۔

سراج الحق

مزید :

صفحہ آخر -