پیسکو کنسٹریکشن ایبٹ آباد، اوپننگ ٹینڈرز میں اندھیر نگری

پیسکو کنسٹریکشن ایبٹ آباد، اوپننگ ٹینڈرز میں اندھیر نگری

  

نوشہرہ(بیورورپورٹ) واپڈا کنٹریکٹرز نے پیسکو کنسٹرکشن ایبٹ آباد ڈویژن میں ٹینڈرز اوپننگ کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ پیسکو کنسٹرکشن ایبٹ آباد ڈویژن کے ایکسین اور کلرک حسیب احمد کی ملی بھگت سے اکثریتی ٹھیکیداروں کو نظرانداز اور منظور نظر ٹھیکیداروں کا نوازنے کا سلسلہ بدستور جاری اپنی 11 فیصد رشوت کی خاطر20 لاکھ روپے کی لاگت کے منصوبے کو 15 لاکھ روپے پر منظور کرلیا کلرک حسیب احمد کو ایکسین سمیت ایبٹ آباد پیسکو کنسٹرکشن کی پوری ٹینڈر کمیٹی کی اشیربات حاصل ہے مذکورہ ٹینڈر منسوخ کئے جائیں ان خیالات کااظہار الیاس پاور پشاور کے ایم ڈی الیاس، حمزہ برادرز نوشہرہ کے سوبت خان، جوہر علی اینڈ کو کے جوہر علی خان، اویس اینڈ فہد ، ایف جے اینڈ ایس نوشہرہ اور عظمت انجینئرزنوشہرہ کے ایم ڈیز نے اجلاس کے بعد اخباری بیان جاری کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ پیسکو کنسٹرکشن ایبٹ آباد ڈویژن نے گزشتہ روز ٹینڈر نوٹس جاری کیاتھا جس میں درخواست جمع کرنے کی تاریخ 15 دسمبر فارم وصولی 19 دسمبر اور ٹینڈر اوپننگ کی تاریخ 21 دسمبر تھی جس میں واپڈا کے مختلف ترقیاتی منصوبے شامل تھے اور ہر منصوبے کی لاگت تخمینہ 20 لاکھ روپے تھا لیکن ایبٹ آباد پیسکو کنسٹرکشن ڈویژن کے کلرک حسیب احمد نے 20 لاکھ روپے کی بجائے 15 لاکھ روپے والے ریٹ کی منظوری دے دی ہے فارم فیس 1 ہزار روپے مقرر کی گئی تھی لیکن یہی حسیب احمد ایکسین پیسکو کنسٹرکشن ایبٹ آباد ڈویژن اور ٹینڈر کمیٹی کی ملی بھگت سے فی فارم 15 سو روپے وصول کرتا رہا اور 11 فیصد رشوت لے کر 20 ہزار کی بجائے 15 ہزار ریٹ دینے والے ٹھیکیداروں کے فارم منظور کردئیے جبکہ کئی ٹھیکیداوں کے فارم بھی غائب کردئیے جس میں حمزہ برادرز نوشہرہ قابل ذکر ہے انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان انجینئرنگ کونسل کا سرٹیفکیٹ ہونے کے باوجود ٹھیکیداروں کو فارم نہیں دئیے گئے جبکہ یہی ٹھیکیدار PEC کے حصول پر لاکھوں روپے سالانہ فیس اور رینیول فیس جمع کرتے ہیں انہوں نے کہا کہ ہم وزیراعظم پاکستان، وفاقی وزیر پانی وبجلی،چیئرمین واپڈا اور نیب حکام سے مطالبہ کرتے ہیں کہ مذکورہ ٹینڈر میں تحقیقات کریں یااس کی منسوخی کے احکامات جاری کریں یا تمام ٹھیکیداروں کو برابری کی بنیاد پر ترقیاتی منصوبوں میں شامل کریں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -