ان تصاویر میں ان لوگوں نے اپنی ایک آنکھ ہاتھ سے کیوں چھپا رکھی ہے؟ حقیقت جان کر ہر مسلمان کی آنکھوں میں آنسو ﺅں کا سیلاب اُمڈ آئے گا

ان تصاویر میں ان لوگوں نے اپنی ایک آنکھ ہاتھ سے کیوں چھپا رکھی ہے؟ حقیقت جان ...
ان تصاویر میں ان لوگوں نے اپنی ایک آنکھ ہاتھ سے کیوں چھپا رکھی ہے؟ حقیقت جان کر ہر مسلمان کی آنکھوں میں آنسو ﺅں کا سیلاب اُمڈ آئے گا

  


دمشق(مانیٹرنگ ڈیسک) ان دنوں سوشل میڈیا پر ایک مہم زوروں پر ہے جس میں لوگ ایک آنکھ پر ہاتھ رکھے اپنی تصاویر بنا کر پوسٹ کر رہے ہیں۔ اس مہم کا محرک کچھ ایسا دلدوز ہے کہ حقیقت جان کر ہر مسلمان کی آنکھوں سے آنسو بہہ نکلیں گے۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق یہ لوگ شام کے ایک معصوم بچے سے اظہار یکجہتی کے لیے یہ تصاویر پوسٹ کر رہے ہیں جو شامی فوج کی بمباری میں زخمی ہو گیا تھا اور اس کی ایک آنکھ ضائع ہو گئی تھی۔ کریم عبداللہ نامی اس بچے کی عمر محض ایک ماہ ہے۔ وہ شام کے دارالحکومت دمشق میں واقع گھر میں اپنی ماں کی گود میں تھا کہ شام کی حکومتی افواج نے اس علاقے میں باغیوں کے ٹھکانوں پر بمباری کر دی اور کریم عبداللہ کا گھر بھی اس کی زد میں آ گیا۔

برطانوی فوجی نے سمندر کی تہہ میں امریکی خاتون کے ساتھ ایسا کام کر دیا کہ دیکھ کر آپ کو بھی اپنی آنکھوں پر یقین نہیں آئے گا

رپورٹ کے مطابق کریم عبداللہ کی والدہ موقع پر ہی جاں بحق ہو گئی تاہم یہ معصوم معجزانہ طور پر محفوظ تو رہا لیکن اس کو شدید زخم آئے اور اس کی بائیں آنکھ بھی ضائع ہو گئی۔اب اس کی بائیں آنکھ کی جگہ صرف زخم کا نشان باقی ہے۔ اس المناک حادثے کے بعد جب کریم عبداللہ کی تصویر منظرعام پر آئی تو دنیا بھر میں کروڑوں لوگوں کو افسردہ کر گئی اور انہوں نے اس سے اظہار یکجہتی کے لیے یہ مہم شروع کر رکھی ہے جس میں وہ اپنی ایک آنکھ پر ہاتھ رکھے تصاویر بنا کر #SolidarityWithKarim کے ہیش ٹیگ کے تحت انہیں پوسٹ کر رہے ہیں۔ آپ بھی شام کی جنگ کے فریقین کو شرم دلانے کے لیے ایسی ہی اپنی تصویر پوسٹ کریں، شاید اسی صورت یہ ہولناک جنگ کے خاتمے کی کوئی صورت نکل آئے، جو اب تک کریم عبداللہ جیسے لاکھوں بچوں کو عمر بھر کے لیے معذور اور یتیم بنا چکی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...