رانا ثناءاللہ کو بے گناہی کے سرٹیفکیٹ دینے والوں کے ذہنوں میں ابہام ہے ،ن لیگ اور پیپلز پارٹی کے رہنماؤں کو طبی بنیادوں پر ضمانتیں ملیں:فردوس عاشق اعوان

رانا ثناءاللہ کو بے گناہی کے سرٹیفکیٹ دینے والوں کے ذہنوں میں ابہام ہے ،ن لیگ ...
رانا ثناءاللہ کو بے گناہی کے سرٹیفکیٹ دینے والوں کے ذہنوں میں ابہام ہے ،ن لیگ اور پیپلز پارٹی کے رہنماؤں کو طبی بنیادوں پر ضمانتیں ملیں:فردوس عاشق اعوان

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعاتو نشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ پارلیمنٹ کی بالادستی کویقینی بنانا حکومت اور اپوزیشن دونوں کی مشترکہ ذمہ داری ہے ، قومی مفادپر سیاست نہیں ہونی چاہیے، ملک کا مفاد ہم سب کی ترجیح ہونی چاہیے ،چیفآف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ قومی ضرورت ہیں ، اس ملک کی سلامتیاور دفاع ہم سب کی ذمہ داری ہے جسے ہمیں یقینی بنانا ہے، الیکشن کمیشناور قانون سازی کے حوالے سے اپوزیشن کے ساتھ رابطے میں ہیں، امید ہے کہمعاملات خوش اسلوبی سے حل ہو جائیں گے، رانا ثناءاللہ کو بے گناہی کےسرٹیفکیٹ دینے والوں کے ذہنوں میں ابہام ہے۔

نجی ٹی وی چینل سےخصوصی بات چیت کرتےہوئےمعاون خصوصی برائےاطلاعات ونشریات ڈاکٹرفردوس عاشق اعوان نے کہا کہ رانا ثناءاللہ کا کیس بہت واضح ہے یہ کریڈٹ اے اینایف کو جاتا ہے جس نے جرات اور بہادری سے طاقتور مافیا پر ہاتھ ڈالا،قانون کے کٹہرے میں سب برابر ہیں،اگر اے این ایف نے کسی کو قانون کےکٹہرے میں کھڑا کیا ہے تو قانون اپنا راستہ اختیار کرے گا ،کسی کا میڈیاٹرائل نہیں ہونا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان حالت جنگ میں ہے اورایسی صورتحال میں سپہ سالار بدلے نہیں جاتے ،ہر قوم اپنےکمانڈر کے پیچھےکھڑی ہوتی ہے، پوری امید ہے کہ آرمی ایکٹ میں ترمیم کے وقت ساری پارلیمنٹیک زبان ہو گی۔ انہوں نے کہاکہ وزراءکے بیانات میں کوئی تضاد نہیںہے،رانا ثناءاللہ کو بے گناہی کے سرٹیفکیٹ دینے والوں کے ذہنوں میں ابہامہے، رانا ثناءاللہ کیس کا چارج فریم تب ہو گا جب ٹرائل شروع ہو گا، ان کےکیس میں تو ابھی ٹرائل شروع ہونا ہے، چالان پیش ہونے کے بعد چارج فریمہوتا ہے، رانا ثناءاللہ کے وکلاءٹارگٹ کر کے عدالتی کارروائی روکنے کیکوشش کرتے رہے، ان کے وکیل بہانوں سے تاریخیں لیتے رہے جس کی وجہ سےٹرائل شروع ہونے میں تاخیر ہوئی۔ معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات نےکہا کہ رانا ثناءاللہ اگر بے گناہ ہیں تو عدالت فیصلہ دے گی، ان کی ضمانت ہوئی ہے، کیس ختم نہیں ہوا۔ انہوں نے کہا کہ ڈرگ کورٹ میں آج تک 15 کلوہیروئن والے ملزم کی ضمانت نہیں ہوئی۔ ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ رانا ثناءاللہ وکٹری کا نشان بناتے ہوئے عدالت سے ایسے باہر آ رہے تھےجیسے عدالت نے انہیں ورلڈ کپ ہاتھ میں تھمایا ہو ۔

معاون خصوصی نے کہاکہپاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) حکومت کیلئے عدالتوں کے فیصلے قابلاحترام ہیں، ہمیں مل کر عدالتی نظام کو موثر بنانا ہے اور قانون کا یکساں اطلاق یقینی بنانا ہے۔ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ کیا نیوایئر اورکرسمس منانے کا حق صرف شریف فیملی کو ہے؟ اس ملک کے آئین و قانون پرپابندی ہر شخص پر فرض ہے، آئین و قانون میں اس بات کی گنجائش نہیں کہ مریم نواز کو والد کی تیمار داری کیلئے بیرون ملک جانے کی اجازت دی جائے۔معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات نے کہا کہ مسلم لیگ ن اور پاکستانپیپلز پارٹی کے قائدین اور رہنماؤں کو طبی بنیادوں پر ضمانتیں ملیں ۔انہوں نے کہا کہ اگر اپوزیشن سیاسی مقاصد اور سیاسی عزائم کو سامنے لا کربلیک میلنگ کر کے کوئی ذاتی ایجنڈا لانے کی کوشش کرے گی تو پاکستان کیتاریخ میں ان کا نام اچھے الفاظ میں نہیں لکھا جائے گا۔ معاون خصوصی نےکہا کہ ہم سب نے مل کر پارلیمنٹ میں اتفاق رائے سے قانون کو منظور کراناہے، اگر اپوزیشن قومی مفاد کے ساتھ کھڑی نہیں ہوتی تو حکومت اگلا لائحہعمل طے کرے گی۔ الیکشن کمیشن اور قانون سازی کے حوالے سے اپوزیشن کے ساتھبیک ڈور رابطے میں ہیں، امید ہے کہ معاملات خوش اسلوبی سے حل ہو جائیںگے۔

مزید : قومی


loading...