اسرائیل پر سرکردہ  عیسائی پادری کو زہر دیکرقتل کرنے کا الزام

اسرائیل پر سرکردہ  عیسائی پادری کو زہر دیکرقتل کرنے کا الزام

  



عمان (صباح نیوز)فلسطین کے سرکردہ عیسائی پادری اور رومن آرتھوڈوکس چرچ کے سربراہ بشپ عطا اللہ حنا نے دعویٰ کیا ہے کہ گذشتہ ہفتے انہیں اسرائیلی فوج نے زہر دے کر جان سے مارنے کی کوشش کی تھی مگر ان کی زندگی بچ گئی اور اسرائیل کی خطرناک سازش ناکام ہوگئی۔مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق بشپ عطا اللہ حنا کو گذشتہ ہفتے اچانک صحت خراب ہونے پر اردن کے دارالحکومت عمان کے ایکہسپتال منتقل کیا گیا تھا۔ وہ اب روبصحت ہیں۔ انہوں نے کہا  کہ اسرائیل نے گذشتہ ہفتے انہیں زہر دے کر ہلاک کرنے کی ناکام کوشش کی تھی مگر وہ محفوظ رہے ہیں۔اردن کے دارالحکومت عمان میں ایک  ہسپتال میں   بات کرتے ہوئے انہوں  نے کہا کہ اسرائیلی دشمن نے مجھے قاتلانہ حملے میں ہلاک کرنے کی کوشش کی تھی، دشمن چاہتا کہ میں ہلاک ہوجاؤں یا پوری زندگی کے لیے مریض بن جاؤں۔ اس نے مجھے زہر دے کر مارنے کی کوشش کی۔ میرے اعصابی نظام پر اس زہر نے گہرے منفی اثرات ڈالے ہیں۔انہوں نے کہا  کہ ایک فلسطینی تحقیقاتی ٹیم میرے جسم میں داخل ہونے والی زہر کے اثرات کی تحقیقات کررہی ہے

مزید : علاقائی