پشتواصلاحی ادبی تحریک کا مطالبات کے حل کیلئے احتجاجی مظاہرہ

    پشتواصلاحی ادبی تحریک کا مطالبات کے حل کیلئے احتجاجی مظاہرہ

  



پشاو ر(سٹی رپورٹر)پشتو اصلاحی ادبی تحریک کے عہدداران نے سوشل میڈیا پر غیر معیاری اور غیر اخلاقی شاعری کے خلاف پشاور پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا اورصوبائی حکومت اور پی ٹی اے حکام سے مطالبہ کیا کہ سوشل میڈیا پر جاری پشتو اقدار کے خلاف شاعری کے خلاف کاروائی عمل میں لائی جائے تاکہ پشتو شاعری کی اصل ساکھ کو تحفظ مل سکے۔مظاہرین نے ہاتھوں میں پلے کارڈذ اور بینرز اٹھا رکھے تھے جس پر پشتو کے نامورشعر اء کے حق میں نعرے درج تھے۔مظاہرے کی قیادت پختونخوا کے نامور شاعر اور تحریک کے صدڈاکٹر ر شہاب عزیز ارمان،جی ایس خالد عزیز،حاجی غلام سرور سرور اور مختلف اضلاع سے ائے ہوئے نامور شعراء نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔اس موقع پر مظاہرین کا کہنا تھا کہ کافی عرصی سے سوشل میڈیا پر غیر معیاری اور غیر سنجیدہ پشتو شاعری کا سلسلہ جاری ہے جسکی وجہ سے نوجوانوں میں فکری صلاحتیں متاثر ہو رہی جبکہ پشتو شاعری کے اقدار بھی خراب ہو رہے ہے کیونکہ سوشل میڈیا پر نازیبا شاعری نے پشتو ثقافت،اسلامی اقدار اور ملک دشمنی شاعری ہے جس نے طوفان بدتمیزی برپا رکھی ہے۔انہوں نے کہا کہ پشتو کے اعظیم شعرا ء ر حمان بابا،خوشحال خان خٹک اور عبدالحمید بابا کی شاعری حقیقی پشتو شاعری ہے جبکہ سوشل میڈیا پر جاری شاعری کا اصلی پشتو شاعری سے کوئی واسطہ نہیں ہے۔انہوں نے صوبائی حکومت اور پی ٹی اے حکام سے مطالبہ کیا ہے سوشل میڈیا کے مختلف فارمیٹ پر پشتو کی غیرمعیاری اور غیرا خلاقی شاعری کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے اور پشتو شاعری کے اقدار کو تحفظ فراہم کرنے کیساتھ ساتھ شعراء کو درپیش مسائل حل کرنے کیلئے اقدامات اٹھائے جائے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر