جماعت اسلامی نظریہ پاکستان کی علمبردار ہے،محمد حسین محنتی

  جماعت اسلامی نظریہ پاکستان کی علمبردار ہے،محمد حسین محنتی

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)جماعت اسلامی سندھ کے امیروسابق رکن قومی اسمبلی محمد حسین محنتی نے کہا ہے کہ جماعت اسلامی حقیقی معنیٰ میں بانی پاکستان حضرت قائد اعظم ؒ کے اسلامی وفلاحی وجمہوری ریاست کے قیام اور تکمیل پاکستان کے ایجنڈے کو پورا کرنے کیلئے جدوجہد کررہی ہے، ان شاء اللہ شہ رگ کشمیر کو پاکستان کا حصہ بناکر تکمیل پاکستان کا ایجنڈا مکمل اوراسلامی وکرپشن فری پاکستان بناکرقائداعظمؒ کا خواب شرمندہ تعبیر کیا جائے گا۔ انہوں نے آج بابائے قوم کی یوم پیدائش کے حوالے سے جاری اپنے ایک بیان میں کہا کہ قائد اعظم محمد علی جناحؒ مسلمانوں کے عظیم لیڈر تھے جنہوں نے اپنی ذات کو پیچھے رکھ کر ملک وملت کے مفادات کو آگے رکھا، اس وقت سیکولر ریاست بھارت میں جو مسلمانوں کے ساتھ ناورا سلوک اور ان پر ظلم کے پہاڑ توڑے جارہے ہیں،بھارت میں بیس کروڑ سے زائد مسلمان اور تمام اقلیتیں عظیم لیڈر محمد علی جناحؒ کے فلسفے، سوچ اور نظریہ کو اپنی امنگوں کی ترجمان سمجھنے پر مجبور ہیں، کانگریس اور بے جے پی کی فسطائی سیاست اور مسلمان دشمنی نے اس تاریخی حقیقیت کو حق اور سچ ثابت کردیا ہے کہ مسلمان اور ہندو دو الگ الگ قومیں، انکا نظریہ، مذہب اور کلچر الگ الگ اور بھارت کو سیکولر ریاست کی بجائے مہابھارت اور کٹر ہندوریاست بنانے کی سوچ نے ہی قائد اعظم اور ان کے ساتھیوں کو پاکستان کی الگ ریاست بنانے پر مجبور کیا تھا،آج مسلمانوں کے عظیم لیڈر قائد اعظمؒ کی دوراندیشی اور نظریہ پاکستان کی سوچ وفکر کو سچ ثابت کرکے دکھایا ہے۔ آج قائد اعظم ؒ کے فرمودات ایمان،تنظیم،اتحاد ویقین محکم پر عمل کرکے ہی ملک وقوم ترقی کرسکتی ہے،انہوں نے مزید کہا کہ قائد اعظمؒ نے جہاں اپنی تقاریر سے مسلمانوں کے اندر ان کے جذبہ قومیت کو فروغ دیا وہاں متعدد بار اس امر کا اعادہ کیا کہ پاکستان کا آئین قرآن وسنت کے مطابق ہوگا، ان کے فرمان کے مطابق ہم ایک عظیم الشان تاریخ اور درخشاں ماضی کے وارث ہیں، ہمیں خود کو اسلام کے حقیقی نشاۃ ثانیہ کیلئے وقف کردینا چاہئے، ان کا یہ کہنا کہ ہمارا آئین ہمیں آج سے تیرہ سو سال پہلے ہمارے عظیم پیغمبر نے دیا تھا، ہمیں تو صرف اس آئین کی پیروری کرتے ہوئے اسے نافذ کرنا ہے اور اس کی بنیاد پر اپنی مملکت میں اسلام کا عظیم نظام حکومت قائم کرنا ہے اور یہی پاکستان بنانے کا مقصد ہے، مگر بدقسمتی سے قیام پاکستان سے لیکر آج تک برسراقتدار آنے والے غیروں کے غلام حکمرانوں نے ایک دن کیلئے بھی پاکستان میں اسلام کو نافذ نہیں کیا جو کہ ان کی اسلام، پاکستان اور قائداعظمؒ سے بے وفائی کا منہ بولتا ثبوت ہے۔

مزید : صفحہ آخر