جیل سے رہائی پانے کے بعد رانا ثناءاللہ کا پہلا اہم ترین بیان سامنے آگیا

جیل سے رہائی پانے کے بعد رانا ثناءاللہ کا پہلا اہم ترین بیان سامنے آگیا
جیل سے رہائی پانے کے بعد رانا ثناءاللہ کا پہلا اہم ترین بیان سامنے آگیا

  



فیصل آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)مسلم لیگ ن کے رہنمارانا ثناءاللہ نے کہاہے کہ مجھ پر منشیات فروشی کاجھوٹا مقدمہ بنانیوالوں پر اللہ کاعذاب نازل ہوگا ، میر سیاسی ساکھ خراب کرنے کی کوشش کی گئی ، سلیکٹڈاور کٹھ پتلیاں ملک نہیں چلا سکتے ۔

لاہور ہائیکورٹ سے ضمانت ملنے کے بعد جیل سے رہائی پانے پر فیصل آباد پہنچ کر پریس کانفرنس کرتے ہوئے رانا ثناءاللہ نے کہا کہ مجھ پر منشیات فروشی کاجھوٹا مقدمہ بنانیوالوں پر اللہ کاعذاب نازل ہوگا ، میر ی سیاسی ساکھ خراب کرنے کی کوشش کی گئی ، سلیکٹڈاور کٹھ پتلیاں ملک نہیں چلا سکتے ۔

راناثناءاللہ کا کہناتھا کہ مجھے لاہورہائی کورٹ کے حکم پرضمانت ملی۔میں ساتھ دینے پر پارٹی لیڈرشپ اورساتھیوں کاشکرگزارہوں۔انہوں نے کہا کہ کچھ لوگ جھوٹ کوسچ ثابت کرناچاہتے تھے۔تھانے میں مجھ سےپوچھ گچھ نہیں کی گئی۔ اگرمیری کوئی ویڈیوہے توپیش کی جائے۔ اتنابڑانیٹ ورک تھاتو6 ماہ میں کیوں نہیں پکڑاگیا؟انہوں نے کہا کہ یہ بے بنیادمقدمہ تھا،ڈرامہ رچایاگیا۔ میں نے پوری زندگی ہیروئن کانشہ نہیں کیا اور نہ کبھی منشیات فروش کی سفارش نہیں کی ہے ۔انہوں نے کہا یہ ظلم اورظلم مٹ کررہے گا، میں پہلے سوفیصد جماعت کے ساتھ کھڑا تھا اور اب ہزار فیصد کھڑا ہوں۔انہوں نے کہاکہ میرا یہ چیف جسٹس سے مطالبہ ہے کہ اس معاملے کی جوڈیشل انکوائری کرائی جائے ۔ اس کیس میں ہیروئن گودام سے نکال کر مجھ پر ڈال دی گئی ہے اور دس پندرہ سرکاری ملازمین گواہ بنادیئے گئے ہیں ، وہ تو بیچارے جو یہ کہیں گے ، وہ کریں گے ۔ انہوں نے کہا کہ اے این ایف میں لوگ ڈیپو ٹیشن پر بھی آتے ہیں، اس لئے میں نے آرمی چیف سے نوٹس لینے کامطالبہ کیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ میں اللہ سے کہتاہوں کہ جن لوگوں نے میرے ساتھ ایسے کیاہے ،اللہ ان پر ذلت کاعذاب نازل کرے ۔ انہوں نے کہا کہ ملکی تاریخ کے گھٹیا ترین سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا گیا ۔

مزید : قومی