”دانش کنیریا کیساتھ مذہب کی وجہ سے امتیازی سلوک کیا گیا، ایک کھلاڑی نے مجھ سے کہا کہ وہ ہمارے ساتھ کھانا کیوں کھا رہا ہے اور۔۔۔“ شعیب اختر نے افسوسناک انکشاف کر دیا

”دانش کنیریا کیساتھ مذہب کی وجہ سے امتیازی سلوک کیا گیا، ایک کھلاڑی نے مجھ ...
”دانش کنیریا کیساتھ مذہب کی وجہ سے امتیازی سلوک کیا گیا، ایک کھلاڑی نے مجھ سے کہا کہ وہ ہمارے ساتھ کھانا کیوں کھا رہا ہے اور۔۔۔“ شعیب اختر نے افسوسناک انکشاف کر دیا

  



لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کرکٹ ٹیم کے مایہ ناز سابق فاسٹ باﺅلر شعیب اختر نے دعویٰ کیا ہے کہ پاکستانی ٹیم میں لیگ سپنر دانش کنیریا کیساتھ مذہب کی بنیاد پر امتیازی سلوک کیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے شعیب اختر نے انکشاف کیا ہے کہ قومی کرکٹ ٹیم کے ایک کھلاڑی نے ایک ہی جگہ پر کھانا کھانے پر بھی دانش کنیریا سے متعلق اعتراض کیا۔ ان کا کہنا تھا ” میں اس حوالے سے زیادہ بات نہیں کرنا چاہتا لیکن ایک مرتبہ کسی کھلاڑی نے مجھے سے کہا، سر وہ یہاں سے کھانا کیوں کھا رہا ہے۔ میں نے کہا کہ میں تمہیں ٹیم باہر نکال دوں گا کیونکہ یہ شخص تمہارے ملک کیلئے وکٹیں حاصل کر رہا ہے۔“

ان کا کہنا تھا کہ ”انگلینڈ کیخلاف سیریز میں جیت کا سہرا میرے سر سجایا گیا لیکن حقیقت تو یہ ہے کہ سیریز جیتنے میں دانش کنیریا اور محمد سمیع نے کلیدی کردار ادا کیا تھا۔ تو پھر دانش کنیریا کو جیت کا کریڈیٹ کیوں نہیں دیا گیا، میرے حوالے سے جب بھی کوئی مسئلہ کھڑا ہوا، وہ یا تو کسی کی جانب سے مذہب کے بارے میں بات کرنے پر ہوا یا پھر جب کوئی اپنے اپنے شہر کا نام لیتا تھا، مجھے اس وقت واقعی بہت غصہ چڑھتا تھا۔“

مزید : کھیل