”اس ملک میں فوج نہیں رہی ، عدلیہ نہیں رہی“علی احمد کرد حکومت کیخلاف پھٹ پڑے

”اس ملک میں فوج نہیں رہی ، عدلیہ نہیں رہی“علی احمد کرد حکومت کیخلاف پھٹ پڑے
”اس ملک میں فوج نہیں رہی ، عدلیہ نہیں رہی“علی احمد کرد حکومت کیخلاف پھٹ پڑے

  



کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) آئینی ماہر علی احمد کرد نے کہاہے کہ وفاقی وزیر قانونی فروغ نسیم کے خلاف توہین عدالت کامقدمہ چلنا چاہئے، اداروں کی لڑائی سے حکومت نہیں چلے گی ،چیف جسٹس نے آرمی چیف کی توسیع کے معاملے میں ریلیف دیا تھا،اس ملک میں فوج نہیں رہی ، عدلیہ نہیں رہی تو اور رہ کیا گیا ہے ؟حکومت عدلیہ کی بھی تضحیک کررہی ہے۔

دنیانیوز کے پروگرام ”آن دا فرنٹ“میں گفتگوکرتے ہوئے علی احمد کرد نے کہا کہ ضمانتوں کے موسم والی بات درست نہیں ہے ، فروغ نسیم کے خلاف توہین عدالت کامقدمہ چلنا چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ اداروں کی لڑائی سے حکومت نہیں چلے گی ، رانا ثناءاللہ کوجیل میں رکھاگیا ، اس کاجواب کون دیگا ؟انہوں نے کہا کہ وکیل کوئی خدائی خدمت گار نہیں ہیں کہ ہر معاملے میں باہر نکل آئیں۔

علی احمد کرد کا کہنا تھاکہ ایک طرف ہم کہتے ہیں کہ اداروں کومضبوطہ ہوناچاہئے لیکن آج صورتحال یہ ہے کہ ادارے بالکل مضبوط نہیں ہیں۔ ایک فوج رہی گئی تھی ، اس کے چیف کامعاملہ بھی دوبارہ عدالت میں جارہاہے ، حکومت عدلیہ کی بھی تضحیک کررہی ہے ، اس ملک میں فوج نہیں رہی ، عدلیہ نہیں رہی تو اور رہ کیا گیا ہے ؟انہوں نے کہا کہ چیف جسٹس نے آرمی چیف کی توسیع کے معاملے میں ریلیف دیا تھا جب ایک قانون موجود ہی نہیں ہے تواس کوبنانے کیلئے چھ ماہ دیئے تھے ۔

مزید : قومی