امریکی صدر کا پینٹاگون کو افغانستان سے مکمل انخلاء کی منصوبہ بندی کاحکم

امریکی صدر کا پینٹاگون کو افغانستان سے مکمل انخلاء کی منصوبہ بندی کاحکم
امریکی صدر کا پینٹاگون کو افغانستان سے مکمل انخلاء کی منصوبہ بندی کاحکم

  

واشنگٹن ، لندن (مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی صدر اوباما نے  پیٹاگون کو افغانستان سے مکمل انخلا  کی منصوبہ بندی کے احکامات جاری کیے ہیں اور افغان صدر حامد کرزئی کو خبردار کیا ہے کہ سیکیورٹی معاہدے پر دستخط نہ ہونے پرامریکہ اس سال کے آخر تک افغانستان سے اپنی تمام فوجیں نکال لے گاجس کی بذریعہ ٹیلی فون افغان صدر کو اطلاع دے دی گئی ہے ۔برطانوی میڈیا کے مطابق دونوں صدور کے درمیان ہونے والی گفتگو کے حوالے سے وائٹ ہاو¿س سے جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ صدر باراک اوباما نے افغان صدر حامد کرزئی کو بتایا ہے کہ چونکہ وہ دو طرفہ سیکیورٹی معاہدے پر دستخط کرنے سے انکاری ہیں اس لیے امریکہ نے 2014 ءکے اختتام تک اپنی تمام افواج کو افغانستان سے نکالنے کی منصوبہ بندی شروع کر دی ہے۔امریکی صدر نے پینٹاگون کو ہدایت کی ہے کہ وہ افغانستان کے ساتھ سیکیورٹی معاہدہ نہ ہونے کی صورت میں 2014ءکے اختتام تک تمام امریکی افواج کےافغانستان سے انخلا کی منصوبہ بندی کرے۔یادرہے کہ صدر حامد کرزئی کہہ چکے ہیں کہ وہ اپنے دور صدارت میں دو طرفہ سیکیورٹی معاہدے پر دستخط نہیں کریں، صدر حامد کرزئی کا اقتدار جولائی میں ختم ہو جائے گا اور وہ افغانستان کے آئین کی رو سے تیسری بار انتخابات میں حصہ لینے کے اہل نہیں ۔تجزیہ کارروں کا خیال ہے کہ حامد کرزئی کی طرف سے دو طرفہ سکیورٹی معاہدے پر دستخط نہ کرنے کی صورت میں افغانستان کی افواج انتہائی کمزور ہو جائیں گی۔

مزید : بین الاقوامی