جنسی حراساں کرنے پر اقوام متحدہ کے آفیشل مستعفی

جنسی حراساں کرنے پر اقوام متحدہ کے آفیشل مستعفی

 نیروبی/نئی دہلی(این این آئی)اقوام متحدہ کے موسمیاتی سائنس پینل کے بھارتی سربراہ راجندر پچوری اپنی ہم وطن ماتحت کو حراساں کرنے کے الزام کے بعد مستعفی ہوگئے ۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق راجندر پچوری کے مستعفی ہونے کے بعد انٹرگورمنٹل پینل آن کلائمیٹ کے بیورو نے ادارے کے نائب سربراہ ایل گوزولی کو آئی پی سی سی کا نگراں سربراہ مقرر کردیا ہے۔نوبل انعام یافتہ پینل نے کینیا کے دارالحکومت نیروبی میں ہونے والی گلوبل وارمنگ سائنس اور انتہائی حساس موسمی سال پر چار روزہ کانفرنس کے دوران اس بات کا اعلان کردیا غیر ملکی میڈیا کے مطابق پچوری جن پر الزام ہے کے انھوں نے اپنی ہم وطن ماتحت 29 سالہ ریسرچر خاتون کو نامناسب پیغامات بھیجے نے نیروبی میں ہونے والی کانفرنس میں شرکت بھی نہیں کی۔راجندر پچوری کا ان خبروں کی تردید کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ان پر جس ای میل اکاونٹ اور فون نمبر سے پیغامات بھیجنے کا الزام لگایا جارہا ہے وہ ہیک ہوچکے ہیں۔پولیس کی جانب سے مذکورہ خاتون کو حراساں کرنے کے حوالے سے تحقیقات کی جارہی ہیں اور گذشتہ روز ان کو گرفتاری سے قبل تین روز کا ریلیف فراہم کیا گیا ۔اقوام متحدہ کے ماحولیاتی پروگرام کے ایگزیکٹو اچمن سٹینر نے ایک بیان میں کہا کہ آج جو بھی ایکشن لیا گیا اس کا آئی پی سی سی کے موسم کی تبدیلی کے پروگرام پر کوئی اثر نہیں ہوگا۔آئی پی سی سی نے ایک رپورٹ کے ذریعے خبردار کیا کہ عالمی طور پر حالیہ گرین ہاوس گیسز کے اخراج کے رجحانات میں، اقوام متحدہ کی جانب سے مقرر کئے جانے والے دو سیٹی گریڈ، دو گنا اضافہ ہوا ہے۔ رپورٹ کے مطابق یہ سب سیلابوں، قحط سالی اور سمندری پانی میں اضافے کا باعث ہوسکتا ہے۔

مزید : عالمی منظر