زرعی معلومات کی فراہمی کیلئے انفارمیشن وکمیونیکیشن ٹیکنالوجی کواستعمال کیاجائے

زرعی معلومات کی فراہمی کیلئے انفارمیشن وکمیونیکیشن ٹیکنالوجی کواستعمال ...

 لاہور(پ ر)کاشتکاروں تک جدید زرعی معلومات پہنچانے کے لیے انفارمیشن اینڈ کمیونیکیشن ٹیکنالوجی کو موثر طور پر استعمال کیاجائے گا۔یہ معلومات سٹیک ہولڈرز تک پہنچانے کے لیے یو ایس ایڈ(USAID) مالی اور تکنیکی تعاون فراہم کرے گا۔ یہ بات زرعی یونیورسٹی فیصل آباد کے ڈاکٹر بشیر احمد ڈائریکٹر سنٹر آف ایڈوانس سٹڈیز ان فوڈ سیکیورٹی /ایگریکلچر نے زراعت ہاؤس لاہور میں منعقدہ ایک روزہ ورکشاپ کے دوران بتائی۔اس ورکشاپ کا انعقاد شعبہ زرعی توسیع اورنظامت زرعی اطلاعات پنجاب کے تعاون سے کیا گیا ۔ اس ورکشاپ میں ڈائریکٹر جنرل زراعت (توسیع)ڈاکٹر انجم علی، زرعی یونیورسٹی فیصل آباد ڈاکٹر بشیر احمدڈائریکٹرسنٹر آف ایڈوانس سٹڈیز ان فوڈ سیکیورٹی /ایگریکلچر ، آؤٹ ریچ پروگرام کے چیئر پرسن ڈاکٹر بابر شہباز، ڈائریکٹر زرعی اطلاعات محمد رفیق اختر کے علاوہ شعبہ تحقیق اور توسیع کے سائنسدانوں اور کاشتکاروں کی کثٖیر تعداد نے شرکت کی۔ ڈاکٹر بشیر احمد نے مزید بتایا کہ ا نفارمیشن کمیونیکیشن ٹیکنالوجی (ICT) کا استعمال وقت کی اہم ضرورت ہے ۔ انہوں نے کہا کہ آئی سی ٹی سے بہتر نتائج حاصل کرنے کے لیے ضروری ہے کہ اس پروگرام میں نوجوانوں اور خصوصاََ خواتین کو شامل کیا جائے ۔ڈاکٹر بابر شہباز چیئر پرسن آؤ ٹ ریچ پروگرام نے اس موقع پر بتایا کہ آئی سی ٹی کے ذریعے تمام زرعی معلومات ایک ہی پلیٹ فارم پر مہیا کی جائیں گی جس سے کاشتکاروں کی اہم معلومات تک رسائی بہت آسان ہو جائے گی ۔انہوں نے مزید کہا کہ زرعی یونیورسٹی میں آئی سی ٹی کے نئے کورسز اور ڈگری پروگرامز بھی شروع کیے جائیں گے جن کے ذریعے کاشتکاروں، تحقیقی اداروں کے سائنسدانوں اور پالیسی سازوں کے درمیان رابطہ استوار کیا جائے گا اور آئی سی ٹی کو ٹیکنالوجی ٹرانسفر کے لیے استعمال کیا جائے گا۔ ڈائریکٹر زرعی اطلاعات محمد رفیق اختر نے اس موقع پر کہا کہ زرعی تحقیق کے نتائج کو کاشتکاروں تک پہنچانے میں میڈیا اہم کردار ادا کر رہا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ یونیورسٹی میں زرعی گریجویٹس کے لیے کمیونیکیشن اور آئی سی ٹی کے نئے کورسز کو متعارف کروا کر زرعی شعبہ کے پروفیشنلز کی ابلاغی صلاحیتوں کو مزید بہتر بنایا جا سکتا ہے ۔

مزید : کامرس