فاٹا کے امیدواروں کی اپیلوں کی سماعت ، الیکشن کمیشن نے ایف بی آر اور نادرا کو طلب کر لیا

فاٹا کے امیدواروں کی اپیلوں کی سماعت ، الیکشن کمیشن نے ایف بی آر اور نادرا کو ...

 لاہور(شہباز اکمل جندران//انوسٹی گیشن سیل) الیکشن کمیشن نے فاٹا کے 18امیدواروں کی اپیلوں کی آج سماعت کے لیے تاریخ میں پہلی بار ایف بی آر اور نادرا کو بھی طلب کرلیا ہے۔ ایف بی آر کے روبرو ٹیکس گوشوارے جمع نہ کروانے کی وجہ سے ان امیدواروں کے کاغذات نامزدگی مسترد کردیئے گئے تھے۔ دوسری طرف ا ن امیدواروں کا موقف ہے کہ فاٹا ٹیکس فری زون ہے۔ اس لیے وہ ٹیکس ریٹرن بھر نے کے پابند نہیں ہیں۔معلوم ہوا ہے کہ الیکشن کمیشن سینٹ کے انتخابات کے سلسلے میں آج ایسے امیدواروں کی اپیلوں کی سماعت کریگا۔ جن کے کاغذات مسترد کردیئے گئے تھے۔جبکہ کل ایسے امیدواروں کے خلاف اپیلوں کی سماعت ہوگی۔ جن کے کاغذات منظور کئے گئے ہیں۔ لیکن ان کے خلاف اعتراضات سامنے آئے ہیں۔اپیلوں کی سماعت چیف الیکشن کمشنر کی سربراہی میں چاروں صوبائی الیکشن کمشنر کرینگے۔بتایا گیا ہے کہ الیکشن کمیشن نے تاریخ میں پہلی بار اپیلوں کی سماعت کے دوران متعلقہ اداروں کے نمائندوں کو طلب کیا ہے۔ جن کے اعتراضا ت کی وجہ سے ان امیدواروں کے کاغذات مسترد ہوئے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ فاٹا کے 18امیدواروں کے کاغذات ایف بی آر کے اعتراض پر مسترد کئے گئے۔ ایف بی آر نے ان امیدواروں کے خلاف اعتراض دائر کیا تھا کہ انہوں نے ٹیکس ریٹرن نہیں بھری۔ جبکہ ریٹرننگ افسروں کے روبرو ان امیدواروں کا موقف تھا کہ وہ فاٹا سے تعلق رکھتے ہیں۔ اور فاٹا ٹیکس فری علاقہ ہے۔ لہذا ٹیکس ریٹرن بھر نے کے پابند نہیں ہیں۔ لیکن ایف بی آر نے ان کے اس موقف کو تسلیم نہیں کیا تھا اور قرار دیا تھا کہ خواہ وہ ٹیکس فری زون سے تعلق رکھتے ہیں۔ لیکن ان کے لیے ضروری ہے کہ وہ ہر سال ٹیکس کا گوشوارہ بھریں۔جس پر ریٹرننگ افسر نے ایف بی آر کے موقف کو تسلیم کرتے ہوئے ان امیدواروں کے کاغذات مسترد کردیئے تھے۔

مزید : صفحہ اول