6برس تک والدین کا اپنی ہی نوجوان بیٹی سے جانوروں والاسلوک کیونکہ۔۔۔

6برس تک والدین کا اپنی ہی نوجوان بیٹی سے جانوروں والاسلوک کیونکہ۔۔۔
6برس تک والدین کا اپنی ہی نوجوان بیٹی سے جانوروں والاسلوک کیونکہ۔۔۔

  

بیجنگ (نیوز ڈیسک) پسند کی شادی کی خواہش رکھنے والوں کو ہمارے ہاں شدید مخالفت اور تکالیف کا سامنا کرنا پڑتا ہے مگر بظاہر مختلف کلچر رکھنے والے چین میں بھی ایک خاندان نے اپنی جواں سال لڑکی کو پسند کی شادی کی کوشش پر نہایت دلخراش ظلم کا نشانہ بنادیا۔ صوبہ ہوبے سے تعلق رکھنے والی 24سالہ مظلوم لڑکی کو اس کے والدین نے تقریباً 6سال سے مویشیوں کے باڑے میں قید کررکھا ہے۔ سینگ کی نامی لڑکی ایک مقامی نوجوان سے شادی کرنا چاہتی تھی لیکن اس کے والدین اس پر راضی نہ تھے۔

دونوعمر طالبات نے ’بھوت‘ کیمرے پر ’پکڑ‘ لیا

جن گینگ نامی قصبے سے تعلق رکھنے والی اس لڑکی نے جب اپنے پسندیدہ لڑکے کے ساتھ فرار ہونے کی کوشش کی تو اس کے والدین نے اس کو باڑے میں قید کردیا اور اسے کھانا اور زندگی کی دیگر سہولیات دینے سے بھی انکار کردیا۔ یہ لڑکی گزشتہ 6 سالوں سے کسی انسان کی مدد کے بغیر ہی اپنی زندگی گزار رہی تھی اور بری طرح بیمار اور کمزور ہوچکی تھی۔ اس گاﺅں کے سابقہ رہائشی چاﺅ جین نے حال میں ہی اس کی تصاویر انٹرنیٹ پر بھیجی ہیں۔ پچاس سالہ چاﺅ کا کہنا ہے کہ لڑکی کے والدین طاقتور لوگ ہیں اور ان کے خوف کی وجہ سے کسی نے بھی زبان نہیں کھولی اور نہ ہی مقامی پولیس نے کوئی ایکشن لیا جس کے بعد اس نے مجبور ہوکر لڑکی کی تصاویر انٹرنیٹ پر بھیج دی ہیں تاکہ کسی کو تو اس پر رحم آئے۔

مزید : انسانی حقوق