لاہور ہائی کورٹ نے سینیٹ الیکشن میں ہارس ٹریڈنگ روکنے کی درخواست پر نوٹس جاری کردیئے

لاہور ہائی کورٹ نے سینیٹ الیکشن میں ہارس ٹریڈنگ روکنے کی درخواست پر نوٹس ...
لاہور ہائی کورٹ نے سینیٹ الیکشن میں ہارس ٹریڈنگ روکنے کی درخواست پر نوٹس جاری کردیئے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لاہور (نامہ نگار خصوصی) لاہور ہائیکورٹ نے سینیٹ کے انتخابات میں ہارس ٹریڈنگ روکنے کے لئے شو آف ہینڈ کے ذریعے ووٹنگ کرانے کے لئے دائر درخواست پر وفاقی حکومت سے 3 مارچ تک جواب طلب کر لیا۔مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ نے جوڈیشل ایکٹوازم پینل کے چیئرمین اظہر صدیق ایڈووکیٹ کی درخواست پر سماعت شروع کی تو درخواست میں موقف اختیا رکیا گیا کہ سینیٹ کے انتخابات میں تمام سیاسی جماعتیں تاریخ کی بدترین ہارس ٹریڈنگ کر رہی ہیں اور ایک ایک ووٹر کی قیمت 40کروڑ روپے لگائی جا رہی ہے ۔ سینیٹ انتخابات میں آئین کی کھلی خلاف ورزی کی جا رہی ہے اور کوئی کسی کو پوچھنے والا نہیں ہے ۔

لاہور ہائی کورٹ نے پنجاب بینک کو سافٹ ویئر کی تیاری کا ٹھیکہ دینے سے تاحکم ثانی روک دیا

سینیٹ انتخابات میں ہارس ٹریڈنگ روکنے کے لئے خفیہ ووٹنگ کی بجائے شو آف ہینڈ کے ذریعے ووٹنگ کرائی جائے اور اس مقصد کے لئے الیکشن کمیشن اور وفاقی حکومت کو آئین کے آرٹیکل 226، سینٹ انتخابات قانون مجریہ1875 اور رولز آف سینیٹ الیکشن میں ترمیم کا حکم دیا جائے ۔ عدالت نے سینیٹ کے انتخابات میں ہارس ٹریڈنگ روکنے کے لئے شو آف ہینڈ کے ذریعے ووٹنگ کرانے کے لئے دائر درخواست کی سماعت کے بعد وفاقی حکومت سے 3مارچ تک جواب طلب کر لیا۔

مزید : لاہور