داعش نے موصل کی مشہور ترین لائبریری کوراکھ بنا دیا،قیمتی ترین کتابیں ضائع

داعش نے موصل کی مشہور ترین لائبریری کوراکھ بنا دیا،قیمتی ترین کتابیں ضائع
داعش نے موصل کی مشہور ترین لائبریری کوراکھ بنا دیا،قیمتی ترین کتابیں ضائع

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

بغداد (نیوز ڈیسک) داعش نے عراق اور شام میں انسانوں کے ساتھ دہشتناک سلوک کرنے کے بعد اب علمی مراکز کے خلاف بھی جنگ کا آغاز کردیا ہے اور اس کا پہلا نشانہ موصل شہر کی مشہور تاریخی لائبریری بنی ہے جس میں موجود ہزاروں کی تعداد میں نایاب کتابوں کو جلا کر راکھ کردیا گیا ہے۔

گھر کی چھت پر برف نہ ہونے کی وجہ سےبھنگ پکڑی گئی

اس شاندار لائبریری میں لاکھوں قیمتی کتب موجود تھیں جن میں سے تقریباً 8 ہزار کو تاریخ کی نایاب ترین کتب میں شمار کیا جاتا ہے۔ شہریوںکا کہنا ہے کہ داعش نے لائبریری کو بموں سے اڑایا اور یہاں موجود صدیوں پرانی کتب کو تباہ و برباد کردیا۔ لائبریری کے ڈائریکٹر غانم التعان کا کہنا ہے کہ شہریوں نے داعش کے جنگجوﺅں کو اس ظلم سے باز رکھنے کی بہت کوشش کی لیکن ان کی ایک نہ سنی گئی۔ اس لائبریری کا قیام جدید عراق کے قیام کے ساتھ 1921ءمیں عمل میں آیا اور اس میں عراق کی کئی ہزار سال پرانی تاریخ سے متعلق نایاب کتب جمع کی گئیں جن میں اٹھارہویں صدی کے قلمی نسخے، شامی کتب، سلطنت عثمانیہ کے دور کی کتب اور زمانہ وسطیٰ کے مسلمان سائنسدانوں کی لکھی گئی کتب اور سائنسی آلات بھی شامل ہیں۔

مزید : انسانی حقوق