سگنل فری کوری ڈور پراجیکٹ :لاہور ہائی کورٹ نے قرطبہ چوک سے لبرٹی چوک تک درخت کاٹنے سے روک دیا

سگنل فری کوری ڈور پراجیکٹ :لاہور ہائی کورٹ نے قرطبہ چوک سے لبرٹی چوک تک درخت ...
سگنل فری کوری ڈور پراجیکٹ :لاہور ہائی کورٹ نے قرطبہ چوک سے لبرٹی چوک تک درخت کاٹنے سے روک دیا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لاہور(نامہ نگارخصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے قرطبہ چوک سے لبرٹی چوک تک سگنل فری کوری ڈور منصوبے کے خلاف درخواست پر ایل ڈی اے اور دیگر حکام کو درختوں کی کٹائی سے روکتے ہوئے قرار دیا ہے پنجاب حکومت لاہور کے ساتھ پتہ نہیں ساتھ کیا کرنا چاہتی ہے ۔عدالت نے ایل ڈی اے اور دیگر محکموں کے افسران کو جواب سمیت طلب کر لیا۔ مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ نے یہ حکم اےک شہری فہد ملک کی درخواست پرجاری کیا ۔ درخواست گزار کے وکیل سعد امیر نے موقف اختیار کیا کہ سات کلو میٹر لمبے سگنل فری منصوبے کے لئے ایک ارب 30 لاکھ روپے خرچ کئے جا رہے ہیں جبکہ یہ رقم مالی سال کے بجٹ میں منظور ہی نہیں کی گئی تھی ۔

حکومت اور تحریک انصاف کی سوچ ایک جیسی ہے ، جوڈیشل کمیشن پر اختلافات ختم ہو گئے ہیں : اسحاق ڈار

انہوں نے مزید موقف اختیار کیا کہ قرطبہ چوک تا لبرٹی چوک سگنل فری کوری ڈور کے لئے محکمہ ماحولیات سے سروے نہیں کروایا گیا اور اس منصوبے کی تکمیل کے لئے ہزاروں درخت کاٹے جا رے ہیں جس سے ماحولیات آلودگی میں اضافہ ہو گا لہٰذا سگنل فری کوری ڈور منصوبے کو روکنے کا حکم دیا جائے۔ عدالت نے درخواست کی ابتدائی سماعت کے بعد قرطبہ چوک سے لبرٹی چوک تک سگنل فری کوری ڈور منصوبے کے خلاف درخواست میں ایل ڈی اے اور دیگر حکام کو درختوں کی کٹائی سے روکتے ہوئے قرار دیا ہے پنجاب حکومت لاہور کے ساتھ پتا نہیں کیا کرنا چاہتی ہے۔ عدالت نے ایل ڈی اے اور دیگر محکموں کے افسران کو جواب سمیت 6 مارچ کو طلب کر لیا۔

مزید : لاہور