اسلامو فوبیانے اسلام اور مسلمانوں کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا،انتہا پسندی اوردہشت گردی کے خاتمے کیلئے پاکستان علماءکونسل کاکردار قابل تعریف ہے: مولاناقاری تصور الحق

اسلامو فوبیانے اسلام اور مسلمانوں کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا،انتہا ...
اسلامو فوبیانے اسلام اور مسلمانوں کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا،انتہا پسندی اوردہشت گردی کے خاتمے کیلئے پاکستان علماءکونسل کاکردار قابل تعریف ہے: مولاناقاری تصور الحق

  



لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن) جمعیت علماءبرطانیہ کے جنرل سیکرٹری مولاناقاری تصور الحق نے انتہا پسندی اوردہشت گردی کے خاتمے کیلئے پاکستان علماءکونسل کےکردارکی تعریف کرتےہوئےکہاہےکہ پاکستان کوعظیم ملک بنانے کیلئے تمام مذاہب و مکاتب فکر کی قیادت کو متحد ہوکر جدوجہد کرنا ہوگی جبکہ پاکستان علماء کونسل کے چیئرمین حافظ طاہر محمود اشرفی کاکہناتھاکہ بھارت میں مساجد ، چرچ اور دیگر اقلیتوں کی عبادت گاہوں پر حملے ہورہے ہیں عالمی برادری کی خاموشی افسوسناک ہے ،آئین پاکستان مسلم اور غیر مسلم پاکستانیوں کو مکمل حقوق دیتا ہے،پاکستان علماءکونسل ہر سطح پربین المذاہب وبین المسالک مکالمہ اورہم آہنگی کے لئے کوشاں ہے ورلڈپیس کونسل کا بھی قیام عمل میں لایاجارہاہے۔

سیرت سنٹرقرآن کمپلیکس لاہور میں پاکستان علماءکونسل کی طرف سے جمعیت علماءبرطانیہ کے جنرل سیکرٹری مولانا قاری تصور الحق کے اعزازمیں تقریب کا اہتمام کیاگیاجس میں حافظ طاہر محمود اشرفی کے علاوہ مولانا ضیاءاللہ شاہ بخاری ، مولانا محمد خان لغاری ، مولانا پیر اسد اللہ فاروق، پیر زبیر عابد ، مولانا اسید الرحمان سعید ، مولانامحمد اسلم صدیقی ، مولاناعبدالحکیم اطہر ،مولانا زاہد زبیر ، قاری شمس الحق ، مولانا ابراہیم حنفی ، مولانا محمد اسلم قادری ، مولانا صاحبزادہ عبدالقیوم فاروقی ، مولانا اسلام الدین و دیگر نے بھی شرکت کی ۔

پاکستان علماءکونسل کے چیئرمین حافظ طاہر محمود اشرفی کاکہناتھاکہ پاکستان میں اقلیتیں محفوظ ہیں اور ہمارے دینی ادارے بھی پہلے کی نسبت زیادہ آزادی کے ساتھ کام کررہے ہیں۔ انہوں نے واضح کیاکہ پاکستان میں30ہزارمدارس کام کر رہے ہیں، 70سالہ تاریخ آج پہلی بار مدارس کو وزارت صنعت کی بجائے محکمہ تعلیم کے ساتھ منسلک کیاگیا، نصاب کے حوالے سے کوئی قدغن نہیں لگائی جارہی ،مدارس کی رجسٹریشن کیلئے سینٹربن چکے ہیں ،جلد ہی رجسٹریشن کا عمل بھی شروع ہوجائے گا ۔انہوں نے کہاکہ پاکستان کے اندر بین المسالک اوربین المذاہب ہم آہنگی کی تنظیمیں اپنا کام کررہی ہیں جبکہ دوسری طرف بھارت میں مساجد کو شہید اورمسلمانوں کو زندہ جلایا جارہاہے۔ انہوں نے کہاکہ بھارت کی انتہا پسند مودی سرکار بھارت کی سرزمین کو اقلیتوں ، خاص طور پر مسلمانوں کےلئے تنگ کرنے پر تلی ہوئی ہے ، ایک تواتر کے ساتھ مسلمانوں کے خلاف جو اقدامات اٹھائے گئے وہ اس بات کی دلیل ہے کہ مودی سرکار خطے کے امن کے لیے خطرہ بن چکی ہے،عالمی برادری بھارت کے ان جارحانہ اقدامات کے سدباب کےلئے اپنا کردار ادا کرے۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان علماءکونسل آزادی کشمیر کیلئے عالمی سطح پر آوازبلندکررہی ہے انشاءاللہ کشمیری بھائیوں کو حق خوداریت ضرور ملے گی، ہماری خواہش ہے کہ پاکستان علماءکونسل اورجمعیت علماءبرطانیہ ملکر امت مسلمہ کے اتحاد کیلئے اپنا کردار اداکرے۔

جمعیت علماءبرطانیہ کے جنرل سیکرٹری مولاناقاری تصور الحق نے کہاکہ اسلامو فوبیانے اسلام اور مسلمانوں کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا ،ایک منظم سازش کے تحت انتہا پسندی اوردہشت گردی کو اسلام سے جوڑ کر اہل مغرب کو گمراہ کرنے کی کوشش کی گئی۔ ہم نے اس طوفان کےسامنے بند باندھنے کےلئے اسلام کی حقیقی تعلیمات اہل مغرب تک پہنچانے کا سلسلہ شروع کیا جو آج بھی جاری ہے۔ انہوں نے کہا کہ کوئی بھی مسلمان روشن خیالی کا مخالف نہیں ہوسکتاکیونکہ اسلام ہی نے روشن خیالی کو متعارف کرایا ہے۔ قرآن، اللہ کا نازل کردہ علم ہے جس میں ہر جگہ سوچ بچار کا حکم دیا گیا ہے۔ زمانہ جاہلیت کے اندھیروں کو قرآن کے ذریعے روشن کیا گیا۔تمام انسانو ںکو بلا تفریق ان کے حقوق سے روشناس کیا گیا اور ان کی حفاظت کی گئی ایک ایسا مذہب جو انسانوں ہی نہیں جانوروں تک کے حقوق کا تحفظ کرے وہ کیسے دہشت گرد ہوسکتا ہے؟مولاناقاری تصور الحق نے کشمیریوں پر ہونے والے ظلم وستم کی مذمت کرتے ہوئے حکومت پاکستان پر زوردیا کہ وہ آزادی کشمیرکیلئے مزید اقدامات اٹھائے ۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور