سینٹرل بزنس ڈسٹرکٹ منصوبے سے کاروباری سرگرمیوں میں اضافہ ہو گا،وزیراعظم عمران خان 

سینٹرل بزنس ڈسٹرکٹ منصوبے سے کاروباری سرگرمیوں میں اضافہ ہو گا،وزیراعظم ...
سینٹرل بزنس ڈسٹرکٹ منصوبے سے کاروباری سرگرمیوں میں اضافہ ہو گا،وزیراعظم عمران خان 

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ لاہور میں سینٹرل بزنس ڈسٹرکٹ منصوبے کے سنگ بنیاد پر خوشی ہے، اس سے کاروباری سرگرمیوں میں اضافہ ہو گا، والٹن ایئرپورٹ کوڈی نوٹیفائی کیاجائےگا۔

لاہور میں سینٹرل بزنس ڈسٹرکٹ کے سنگ بنیاد رکھنے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہاکہ آج صبح قطر سے ایل این جی نیا معاہدہ ہواہے،ہرسال اس معاہدے کے تحت 300 ملین ڈالر کی بچت ہو گی ،پچھلے ایک سال سے قطر کیساتھ معاہدے کی کوشش کررہے تھے ۔

انہوں نے کہاکہ جب ملک پر مشکل وقت آتا ہے تو ہٹ کر فیصلے اورسوچناپڑتا ہے،اس وقت پاکستان کو دو بڑے مسائل کا سامنا ہے ،پاکستان کے گزشتہ 10 سال اندھیروں کی دہائی تھی ،امپورٹ ایکسپورٹ میں اتنا خسارہ تھا کہ باہر سے قرضے لیناپڑے،اس کی وجہ سے روپے پر دباﺅ پڑا ور مہنگائی ہو گئی ۔

وزیراعظم پاکستان نے کہاکہ ان مسئلوں سے نکلنے کیلئے اخراجات کم اورپیسے بڑھانا ہے،ہمیں اپنی دولت بڑھانا ہوگی تاکہ قرضے واپس کرسکیں ،ان کاکہناتھا کہ سینٹرل بزنس ڈسٹرکٹ کے پہلے فیز میں 1300 ارب روپے کمائی ہوگی ،والٹن ایئرپورٹ ڈی نوٹیفائی ہو تو اطراف کا علاقہ معاشی حب بنے گا۔

وزیراعظم عمران خان نے کہاکہ لاہور کو پھیلنے سے روکنے کیلئے اونچی عمارتوں کی طرف جانا ہوگا،لاہور اتنی تیزی سے پھیلاہے کہ منفی اثرات سامنے آرہے ہیں ،لاہور میں سب سے بڑا مسئلہ صاف پانی کی قلت کاسامنا ہے،دوسرامسئلہ سیوریج کا ہے جو سندھ تک جارہا ہے،راوی سردیوں میں سکڑنے کی وجہ سے سیوریج کا نالہ بن جاتا ہے ۔

وزیراعظم نے کہاکہ والٹن ایئرپورٹ ڈی نوٹیفائی ہونے سے کمرشل سرگرمیاں6 ہزارارب تک جا سکیں گی ،راوی سٹی سے بھی پورے پاکستان کو فائدہ ہوگا۔انہوں نے کہاکہ پاکستان کا سب سے بڑاانوائرمنٹلسٹ اپنے آپ کو سمجھتا ہوں،بڑے بڑے جنگل ختم ہو گئے،زمینوں پر قبضے ہو گئے ،ان کاکہناتھا کہ لاہور میں کوئی درخت نہیں کرے گاجسے ہٹاپڑا اس کی جگہ بدل دیںگے ۔

وزیراعظم نے کہاکہ اوورسیز پاکستانی ہمارا سب سے بڑااثاثہ ہیں ،وہ پاکستان کی ہاﺅسنگ سوسائٹیزمیں انویسٹ کرتے ہیں ،راوی اربن پراجیکٹ اور اس منصوبے میں اوورسیز کی دلچسپی ہے،انہوں نے کہاکہ پوری کوشش کررہے ہیں بینک چھوٹے ملازمین کو قرض دیں ،پہلی بارملکی تاریخ میں کوشش ہورہی ہے تنخواہ دار کےلئے گھر بنائے جائیں ،کوشش ہے جو لوگ ماہانہ کرایہ دیتے ہیں وہ قسطوں پر گھر حاصل کریں،انہوں نے کہاکہ دبئی چھوٹا شہرتھا جو اتنا بڑا اور تبدیل ہوگیا،اس تبدیلی کے پیچھے ایک ویژن تھا،منصوبہ بڑی تیزی سے ٹیک آف کرتا نظرآئے گا،لاہور اب مارڈن سٹی کی طرف بڑھے گا۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -علاقائی -پنجاب -لاہور -