نیب نے نجی چکن کمپنی کے خلاف تحقیقات کی منظوری دے دی

نیب نے نجی چکن کمپنی کے خلاف تحقیقات کی منظوری دے دی
نیب نے نجی چکن کمپنی کے خلاف تحقیقات کی منظوری دے دی

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)قومی احتساب بیورو (نیب)نے شہریوں کو اربوں روپے کا چونا لگانے والی نجی لاثانی چکن کمپنی چکس اینڈ آئل ٹریڈرز کے خلاف تحقیقات کی منظوری دیتے ہوئے سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان(ایس ای سی پی)، مالیاتی ادارے اور بینکوں سے مذکورہ کمپنی کا ریکارڈ طلب کیا گیا ہے ۔

نجی ٹی وی  کے مطابق مذکورہ کمپنی کی جانب سے کسانوں کو مرغی اور ڈیزل کی خریداری کا لالچ دیا گیا، خریداری کے بعد تمام انویسٹرز کو ادائیگی کے معاہدے کے چیک بھی دیے گئے، سرمایہ کاروں سے مبینہ طور پر 10 ارب روپے سے زائد رقوم لینے کے بعد مذکورہ کمپنی کی انتظامیہ روپوش ہو گئی اور تاحال روپوش ہے ،واقعہ کے بعد رواں ماہ اربوں روپے سے محروم ہونے والے متاثرین نے نیب لاہور آفس کے باہر جمع ہو کر احتجاج کیا، جس کے بعد نیب نے تحقیقات کا آغاز کیا۔

معلوم ہوا کہ نجی چکن کمپنی نے سرمایہ کاروں کو مرغیوں اور ڈیزل کی خریداری میں غیر معمولی منافع  کا لالچ دیا تھا، اور اس طرح اربوں روپے بٹور کر انتظامیہ بھاگ گئی، احتجاج کے بعد چیئرمین نیب نے 17فروری کو متاثرین سے ملاقات  کرتے ہوئےمطالبہ کیا تھا کہ لاثانی چکن اینڈ چکس اور لاثانی ٹریڈرز کے چیف ایگزیکٹو انیس الرحمان اور ان کے گروہ کے دیگر ساتھی پورے پاکستان سے زیادہ منافع، فراڈ اور دھوکہ کی آڑ میں عوام الناس سے تقریباًً 80ارب روپے  لوٹنے کےبعد اپنے دفاتر بند کر کے رفو چکر ہو گئے ہیں،انصاف فراہم کرتے ہوئے متاثرین کی جمع پونجی واپس کروائی جائے ۔ 

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -