امریکی حکام نے تاریخی کمزوری پر جرمانہ کیا، اب نظام میں بہتری آئی ہے، نیشنل بینک 

امریکی حکام نے تاریخی کمزوری پر جرمانہ کیا، اب نظام میں بہتری آئی ہے، نیشنل ...

  

 اسلام آباد (این این آئی)نیشنل بینک آف پاکستان (این بی پی) کے صدر عارف عثمانی نے امریکا کی جانب سے سرکاری بینک پر 5 کروڑ 54 لاکھ ڈالر جرمانہ عائد کرنے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ جرمانہ ’قواعد کی تکمیل کے پروگرام میں کمزوری اور اس سے متعلق اصلاحات میں تاخیر کے سبب کیا گیا ہے۔این بی پی کے صدر نے کہا کہ بینک کی نئی انتظامیہ کے تحت نظام میں بہتری آئی ہے اس سلسلے میں نیشنل بینک آف پاکستان کے صدر عارف عثمانی نے پاکستان اسٹاک ایکسچینج (پی ایس ایکس) کو خط لکھا ہے۔خط میں امریکی قوانین پر عمل نہ ہونے پر نیشنل بینک پر 5 کروڑ 54 لاکھ ڈالر جرمانے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا گیا کہ تحقیقات میں غلط ٹرانزیکشن یا دانستہ بدانتظامی ثابت نہیں ہوئی۔امریکی فیڈرل ریزرو بورڈ نے اینٹی منی لانڈرنگ کی خلاف ورزیوں پر بینک پر 2 کروڑ 4 لاکھ ڈالر جرمانے کا اعلان کیا تھا۔بورڈ کی جانب سے جاری کردہ بیان کے مطابق بینک کو اپنے انسداد منی لانڈرنگ پروگرام کو بھی بہتر بنانے کی ضرورت ہے۔بیان میں کہا گیا کہ این بی پی کے امریکی بینکاری نظام میں ’منی لانڈرنگ کے قوانین کی تعمیل کرنے کے لیے کوئی مؤثر رسک مینجمنٹ پروگرام یا کنٹرولر سسٹم موجود نہیں ہے۔انہوں نے کہاکہ نیشنل بینک کا وفاقی ذخائر بورڈ اور وفاقی ذخائر بینک نیویارک سے معاہدہ طے پایا اور نیویارک اسٹیٹ ڈیپارٹمنٹ آف فنانشل سروسز (این وائی ڈی ایف ایس) بھی بطور ریگولیٹر معاہدے میں شامل ہے۔انہوں نے کہا کہ قوانین کی عدم تکمیل کا عمل بارہاں دہرانے پر 'این وائی ڈی ایف ایس' نے 3 کروڑ 50 لاکھ ڈالر کا جرمانہ عائد کیا ہے۔این وائی ڈی ایف ایس کے سپرنٹنڈنٹ ایڈرینی اے ہیرس نے اعلان کیا ہے کہ نیشنل بینک اور اس کی نیویارک برانچ جرمانہ ادا کرنے کے لیے تیار ہے۔ایڈرینی اے ہیرس کا حوالہ دیتے ہوئے بیان میں کہا گیا کہ این بی پی کی نیو یارک برانچ نے بار بار ریگولیٹری کی تنبیہ کے باوجود بھی سالوں تک قوانین کی سنگین خامیوں کو برقرار رکھا۔صدر این بی پی نے کہا کہ بینک، ماضی میں امریکی قوانین پر عمل درآمد میں تاخیر کا مرتکب ہوا تھا جبکہ مئی 2020 سے بینک، نیویارک برانچ کی نئی انتظامیہ کے تحت کام کر رہا ہے۔نیشنل بینک کے صدر نے کہا کہ متعلقہ قوانین پر عمل درآمد میں بہتری آئی ہے تاہم امریکی ریگولیٹرز نے بھی بہت سی مثبت تبدیلیوں کو سراہا ہے۔صدر عارف عثمانی نے کہا کہ نیشنل بینک، نیویارک برانچ ریگولیٹرز کی توقعات پر پورا اترنے کیلئے پرعزم ہے۔

نیشنل بینک

مزید :

صفحہ آخر -