تحریک عدم اعتماد ہمارا آئینی حق، یہ آپشن استعمال کرنے سے کوئی نہیں روک سکتا: شہباز شریف

    تحریک عدم اعتماد ہمارا آئینی حق، یہ آپشن استعمال کرنے سے کوئی نہیں روک ...

  

         لاہور(نامہ نگار) صدر پاکسان مسلم لیگ (ن)  شہباز شریف نے کہا ہے کہ مہنگائی نے عوام کو مشکل میں ڈال دیا، غربت آسمان سے باتیں کر رہی ہے، تحریک عدم اعتماد آئینی حق ہے، یہ آپشن استعمال کرنے سے کوئی نہیں روک سکتا۔میا شہبازشریف نے کہا کہ عمران نیازی کسی پر الزام لگانے سے قبل اپنے گریبان میں جھانکیں،کرپشن تمہارے گھر میں ہو رہی ہے،مہنگائی نے عوام کاجینا مشکل کردیا ہے،تحریک عدم اعتماد 22کروڑ پاکستانیوں کی خواہش ہے،میری پارٹی اورقائد جو حکم دیں گے میں وہی کروں گا،تحریک عدم اعتماد کے بعد وزیر اعظم کون ہو گا،فیصلہ میاں نواز شریف اور پارٹی کی مشاورت سے ہو گاآج کچھ حقائق قوم کے سامنے رکھنا چاہتا ہوں،مجھے 2018 ء میں صاف پانی میں بلا کر آشیانہ میں گرفتار کیا گیا،نیب نے سابق ڈی جی ایل ڈی احد چیمہ فواد حسن فواد کو گرفتار کیا، لندن اور سوئزر لینڈ میں میرے اکاؤنٹ چیک کئے گئے، 56 کمپنیوں کے حوالے سے مجھے نشانہ بنایا گیا،صاف پانی کمپنی میں حکومت نے اربوں روپے کے غبن کا الزام لگایا،تین سال صاف پانی کیس میں ہمارے ایم پی اے اور ساتھیوں کو پابند سلاسل رکھا صاف پانی کمپنی کے ملزمان کئی کئی ماہ جیلوں میں رہے جنہیں عدالت نے کچھ دن قبل باعزت بری کردیا،جس طرح وہ کئی ماہ جیلوں میں رہے ان کے گھر والوں سے پوچھے کیا کن مشکلات سے گزرے ہونگے وہ یہ فیصلہ جو دیا گیا یہ میری نہیں میاں نواز شریف کی عزت اور جیت ہے،میرے خلاف اگر قوم کے پیسوں سے کرپشن ثابت ہو جائے تو مرنے کے بعدمجھے قبر سے بھی نکال کر تختہ دار پر لٹکا دیجئے گا، نیب نیازی گٹھ جوڑ نے ملکی اعتماد اور معیشت تباہ کر دی،اس حکومت نے چین جیسے ملک کو بھی ناراض کر دیا ہے، بے گناہ لوگوں کو نیب کہتا کہ شہباز شریف کے خلاف بیان دے دو آپکو چھوڑ دے گئے، نیب اور نیازی گٹھ جوڑ سے بے گناہ لوگوں کو گرفتار کیا گیا،میں نے کم ترین بولی میں صاف پانی کمپنی کے ٹھیکے دئیے، میں نے یہ جرم صرف عوام کے لیے کیا، پنجاب کی عوام کے کروڑوں روپے بچائے، میاں شہبازشریف نے مزید کہا کہ صاف پانی کیس میں الزم لگایا گیا کہ اربوں، کھربوں کا نقصان کیا جبکہ صاف پانی کے 118 فلٹریشن پلانٹ کو 1 ارب 14 کروڑ سے 98 کروڑ پر لائے، میں نے کم ترین بولی میں صاف پانی کمپنی کے ٹھیکے دئیے، میں نے یہ جرم صرف عوام کے لیے کیا، پنجاب کی عوام کے کروڑوں روپے بچائے، پپرا رولز کی خلاف ورزی کا جرم مانتا ہوں لیکن یہ جرم قومی خزانے کی بچت کے لئے کیا، میں نے اورنج لائن ٹرین میں بھی سب سے کم بولی لگوانے والے سے بھی 70 ارب مزید کم کروائے، تحریک عدم اعتماد کامیاب ہونے پر معیشت کی بہتری کے ایک سوال کے جواب میں میاں شہبازشریف نے کہاکہ میری پارٹی اورقائد جو حکم دیں گے میں وہی کروں گا،تحریک عدم اعتماد کے بعد وزیر اعظم کون ہو گا،فیصلہ میاں نواز شریف اور پارٹی کی مشاورت سے ہو گا،انہوں نے مزید کہا کہ تحریک عدم اعتماد لانا آئینی حق ہے اس سے کوئی روک نہیں سکتا، وزیراعظم بننے کے سوال پر انہوں نے کہا کہ ایک سال کے لئے کون بن رہا ہے ان لوگوں کی مہربانی ہے جو میرے وزیر اعظم بننے کی بات کرتے ہیں،میاں شہبازشریف نے مزید کہا کہ میں نے کئی سو ارب روپے مختلف منصوبوں میں قوم کے بچائے،میں نے 10سالوں میں عوامی منصوبوں میں 2300 ارب روپے لگائے جو کہ مثالی منصوبے تھے،چنیوٹ مائنز کا ٹھیکہ مشرف نے اپنے سیکرٹری کو دیا،میں نے چنیوٹ مائنز منصوبے میں قوم کے چار سو ارب روپے بچائے،اورینج لائن ٹرین پر بھی میں نے اربوں روپے کی کم بڈنگ کے ذریعے پیسے بچائے،ہم نے نواز شریف کو یہ تحفہ دیا،میں نے کمپنیوں کو کہا مجھے لوگ پوچھیں گے،بولی کم دینے والوں سے بھی  مزید رقم کم کروائی،مجھے فخر ہے کہ میں نے پاکستانی قوم کا ایک ایک روپیہ بچایا،میں نے اورینج لائن میں بھی 70ارب روپے بچائے،آج میں آپکو بتانا چاہتا ہوں کہ ایک سو اٹھارہ واٹر فلٹریشن پلانٹ لگائے،اس کی بولیاں اپریل 2015 میں لگی اور جولائی میں ٹھیکے دئیے گئے،اس کمپنی کو میں نے چیئر کیا،اگر میں بطور وزیر اعلی تمام محکموں کو دیکھتا تھا تو یہ کمپنیاں بھی حکومت کی تھی،نیب والے کہتے تھے کہ آپکو یہ حق نہیں تھا،یہ میٹنگ میں نے چیئر کی اس میں صاف لکھا ہے،یہ میٹنگ کا آغاز تلاوت قرآن پاک سے ہوتا تھا،اس کمپنی کے چیئرمین کو بھی نیب میں رکھا،یہ باتیں کرتے رہے کہ شہباز شریف کے خلاف بیان دے دو،کبھی کسی کو کہا گیا تم شہباز شریف کے خلاف وعدہ معاف گواہ بن جاو،پیپرا کا قانون یہ کہتا ہے کہ بولی دینے والے سے حکومت کم نہیں کروا سکتی۔

شہباز شریف

مزید :

صفحہ اول -