امریکی تاریخ میں پہلی مرتبہ سپریم کورٹ میں خاتون جج نامزد

    امریکی تاریخ میں پہلی مرتبہ سپریم کورٹ میں خاتون جج نامزد

  

واشنگٹن (اظہر زمان، بیورو چیف) صدر بائیڈن نے وفاقی اپیل جج سیاہ فام خاتون کیٹنجی جیکسن کو سپریم کورٹ کے جج کے عہدے کیلئے نامزد کردیا ہے۔ اس طرح امریکہ کی اعلیٰ ترین عدلیہ کی 232سال کی تاریخ میں پہلی مرتبہ ایک خاتون یہ عہدہ سنبھالے گی۔ صدربائیڈن  نے  یہ اعلان کرتے ہوئے مس جیکسن کو ”قانونی میڈن میں ملک کے ذہین ترین افراد میں سے ایک“ قرار دیا۔ سپریم کورٹ کے ایک لبرل جج سٹیفن برائر گزشتہ برس جون میں ریٹائر ہوگئے تھے۔ نئی نامزدگی کنفرم ہونے کے بعد بھی نورکنی سپریم کورٹ میں لبرل اور قدامت پسند ججوں کا تناسب ویسا ہی رہے گا۔ کیونکہ نئی خاتون جج بھی لبرل ہیں اس وقت چھ جج قدامت پسند ہیں اور تین جج لبرل ہی رہیں گے۔ سپریم کورٹ کے نامزد جج کو کنفرم کرنے کیلئے سینیٹ کی منظوری ضروری ہے۔ اس وقت سو رکنی سینیٹ میں ڈیمو کریٹک اور ری پبلکن ارکان کی تعداد برابر یعنی پچاس، پچاس ہے۔ تاہم اگر پارٹی لائن کے مطابق ووٹ پڑیں تو نائب صدر کملاہیرس جو بلالحاظ عہد سینیٹ کی چیر پرسن بھی ہیں اپنا ووٹ استعمال کرکے ڈیمو کریٹک پارٹی کی نامزدگی کو برتری دلاسکتی ہیں۔

جج نامزد

مزید :

صفحہ اول -