وزیراعظم کا دورہ روس انتہائی کامیاب رہا، کوئی ہمیں بین الاقوامی معاملات پر ڈکٹیٹ نہ کرے: فواد

وزیراعظم کا دورہ روس انتہائی کامیاب رہا، کوئی ہمیں بین الاقوامی معاملات پر ...

  

       اسلام آباد (نیوزایجنسیاں) وزیر اعظم عمران خان کا دورہ روس انتہائی کامیاب رہا، ا سکے وقت سے حوالے سے باتیں کرنے والوں کی اپنی رائے ہو سکتی ہے، کسی بھی ملک کے ساتھ عین وقت پر اعلیٰ سطحی دورہ ختم کردینا مناسب رویہ نہیں ہوتا، کوئی پاکستان کو بین الاقوامی معاملات میں ڈکٹیٹ کرے اور نہ کوئی ہمیں اس حوالے سے ڈکٹیٹ کر سکتا ہے، ہم نے کبھی کسی کو ڈکٹیٹ نہیں کیا، کوئی بھی ملک پاکستان کو یہ نہیں کہہ سکتا ہے کہ اس کا وزیر اعظم کس وقت کس ملک کا دورہ کرے یا نہ کرے۔ہمیں بزدلانہ فیصلے نہیں کرنے چاہئیں۔ جمعہ کو وفاقی وزیر فواد حسین نے نجی ٹی وی پروگرام سے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان کا دورہ روس انتہائی کامیاب دورہ رہا ہے۔ وزیر اعظم کے دورہ روس کے وقت کے حوالے سے باتیں کرنے والوں کی اپنی رائے ہو سکتی ہے لیکن بین الاقوامی معاملات کے تناظر میں ا ن باتوں کی کوئی اہمیت نہیں ہے۔ کسی بھی ملک کے ساتھ عین وقت پر اعلیٰ سطحی دورہ ختم کردینا مناسب رویہ نہیں ہوتا ہے۔فواد چوہدری نے  ملک کی سیاست پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ نون لیگ نے (ق) لیگ کا وزیر اعلیٰ پنجاب اور پیپلز پارٹی کا وزیر اعظم لا رہی ہے تو  پھر لگتا ہے کہ وہ خود پکوڑے ہی بنائے گی اور اگر پیپلز پارٹی نے سب کچھ نو ن لیگ کو ہی دینا ہے تو پھر پیپلز پارٹی کیا پتنگ اڑائی گی۔ اپوزیشن کی کوئی سوچ نظریہ اور سیاست نہیں ہے وہ صرف عمران خان کو ہٹا کر اپنے خلاف کرپشن کیسز میں کمی لانا چاہتے ہیں۔ اپوزیشن اگر تحریک انصاف حکومت کو گرا بھی دے تو چوں چوں کا مربہ ہی ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن سے جو حکومتی اراکین رابطے میں ہیں یا انہیں خریدنے کی کوشش کی جا رہی ہے ان کے بارے میں مکمل طور پر آگاہ ہیں اور مناسب وقت آنے پر ان کے نام بھی سامنے لائیں جائینگے۔ لیکن ابھی تو معاملات شروع بھی نہیں ہوئے ہیں اپوزیشن دوڑ شروع ہونے سے پہلے ہی تھک گئی ہے۔اپنی ٹویٹ میں فواد نے کہا کہ سوشل میڈیا پرلوگوں کی عزتوں سے کھلواڑ کیا جارہا ہے۔ پیکا قانون کی مکمل حمایت کرتا ہوں۔ فواد چوہدری نے مزید کہا کہ قانون کوبہترکرلیں لیکن یہ کہنا کہ کوئی قانون نہ ہویا ایسا قانون ہوجو نافذ نہ ہوسکے بے تکی بات ہے۔یہ سیاسی نہیں سماجی معاملہ ہے۔ سیاسی جماعتوں کومیڈیا اصلاحات کیلئے اکٹھا ہونا چاہئے۔

فواد چوہدری 

مزید :

صفحہ اول -