اے آئی پی کے دوسرے مرحلے کے سلسلے میں ضلع کرم میں مشاورتی اجلاس 

      اے آئی پی کے دوسرے مرحلے کے سلسلے میں ضلع کرم میں مشاورتی اجلاس 

  

پشاور(سٹاف رپورٹر)نئے ضم شدہ اضلاع کی تیز تر ترقی میں عوامی رائے شامل کرنے کیلئے حکومت خیبرپختونخوا کے شروع کردہ پروگرام(اے آئی پی)کے دوسرے مرحلے کے سلسلے میں ضلع کرم میں مشاورتی اجلاس کا انعقاد کیا گیا۔ صدہ جرگہ ہال میں منعقدہ اجلاس میں صوبائی مشیر اوقاف و مذہبی امور ظہور شاکر،ڈپٹی کمشنرکرم واصل خان خٹک، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ایف اینڈ پی کرم محمد نعیم خان طورو، اسسٹنٹ کمشنر لوئر کرم فضل ودود صافی، اسسٹنٹ کمشنر سنٹرل کرم شاہ وزیر، ایڈیشنل اسسٹنٹ کمشنر شہروز رشید، ڈی ایس پی پولیس سنٹرل کرم محمدی خان، متعلقہ محکموں کے سربراہان، صحافی برادری اور قبائلی مشران نے شرکت کی۔ ڈپٹی کمشنر کرم واصل خان خٹک نے قبائلی مشران کو گزشتہ تین سالوں میں اے آئی پی پروگرام کے پہلے مرحلے کے ثمرات سے آگاہ کرنے کے علاوہ ضلع کرم میں ہونے والے ترقیاتی منصوبوں کے حوالے سے تفصیلی بریفنگ دی۔ اس موقع پر مشیر اوقاف نے اپنے خطاب میں کہا کہ صوبائی حکومت نئے ضم اضلاع کی تیزتر تر قی میں انتہائی مخلص ہے اورچاہتی ہے کہ ترقیاتی عمل میں عوام کی رائے کو شامل کیا جائے یہی وجہ ہے کہ دوسرے مرحلے میں ضم اضلاع کے تمام مکتبہ فکرکے افراد سے مشاورت کا آغاز کردیا گیاہے۔ انہوں نے متعلقہ اضلاع کے عوام سے اپیل کی کہ وہ صوبائی حکومت کے شروع کردہ مشاورتی عمل میں بھر پورشرکت کریں اورعلاقے کی تیز تر ترقی کیلئے حکومت کو قابل عمل اورمخلصانہ آراء دیں تاکہ ان کی آراء کو ترقیاتی عمل کاحصہ بنایاجاسکے۔اس موقع پر قبائلی مشران اخونزادہ محمد اکرم، ملک یعقوب خان اوردیگرشرکاء نے ضلع کرم کے بنیادی مسائل جن میں بجلی، صحت، سی ایل سی پی سروے، روڈزاور دیگر ترقیاتی منصوبے شامل تھے پیش کرنے کے علاوہ اے آئی پی کے حوالے سے مفید اورقابل عمل تجاویز بھی دیں۔قبل ازیں ڈپٹی کمشنر کرم واصل خان خٹک نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ تمام مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والے افراد کی تجاویز کو ایک رپورٹ کی شکل میں صوبائی حکومت کو ارسال کیا جائے گا تاکہ انھیں ترقیاتی پراجیکٹس اے آئی پی فیز-2  میں شامل کر کے علاقے کی ترقی اور خوشحالی میں ایک اہم باب ثابت کیا جا سکے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -