سندھ حکومت کا صوبے کے تمام سرکاری ہسپتالوں میں مردہ خانے بنانے کا اعلان

سندھ حکومت کا صوبے کے تمام سرکاری ہسپتالوں میں مردہ خانے بنانے کا اعلان
سندھ حکومت کا صوبے کے تمام سرکاری ہسپتالوں میں مردہ خانے بنانے کا اعلان

  

 کراچی (ویب ڈیسک) صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر ڈاکٹر عذرا فضل پیچوہو نے سندھ کے تمام سرکاری ہسپتالوں میں کولڈ سٹوریج سینٹرز اور مردہ خانے قائم کرنے کا اعلان کردیا۔ 

صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر ڈاکٹر عذرا فضل پیچوہو نے  تین روزہ 18 ویں بین الاقوامی کانفرنس کی افتتاحی تقریب سے خطاب میں کہا ہے کہ سندھ کے تمام سرکاری ہسپتالوں میں کولڈ سٹوریج سینٹرز اور ہسپتالوں میں جاں بحق ہونے والوں کے لیے مردہ خانے قائم کیے جائیں گے۔

کانفرنس پاکستان سوسائٹی آف گائناکالوجی کے جانب سے کراچی میں جمعے کو شروع کی گئی جو 27 فروری تک کراچی کے مقامی ہوٹل میں جاری رہے گی، کانفرنس کا موضوع کوویڈ19، خواتین کی صحت کیلیے ایک مسلسل چیلنج ہے، کانفرنس کے انعقاد کا مقصد ماں اور بچے کی صحت کی دیکھ بھال کو مزید بہتر بنانا ہے۔ اس کے علاوہ ملک میں دورانِ زچگی ہونے والی اموات کی شرح کو کم کرنا ہے، کانفرنس کا افتتاح صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر عذرا فضل پیچوہو نے کیا۔

ان کا کہنا کہ کراچی سمیت تمام سرکاری ہسپتالوں میں کولڈ سٹوریج اور سول ہسپتال کے کولڈ سٹوریج سینٹر کو جلد فعال کردیا جائے گااور سرکاری ہسپتالوں میں جاں بحق ہونے والوں کیمیت کو رکھنے کیلیے مردہ خانے بھی قائم کیے جائیں گے۔انھوں نے کوویڈ وبا کے دوران ہسپتالوں جاں بحق ہونے والوں طبی عملے کو خراج عقیدت پیش کیا اور کہاکہ فرنٹ لائن ہیلتھ ورکروں نے اپنی جانوں کا نذرانہ دیا، سوسائٹی کی صدر پروفیسر رضیہ کوریجو، جنرل سیکریٹری پروفیسر حلیمہ یاسمین، کور کمیٹی کے ممبران پروفیسر آفتاب منیر، ڈاکٹر سادیہ احسن پال، پروفیسر نصرت شاہ، سمیت سائنسی محقیقین، کمیونٹی ہیلتھ کے ماہرین سمیت دیگر بھی موجود تھے۔

سوسائٹی کے صدر پروفیسر رضیہ کوریجو، پروفیسر حلیمہ یاسمین اور دیگر ماہرین نے بتایا کہ پاکستان میں کورونا وباکے دوران ماہر امراض نسواں نے اپنی بھرپور خدمات انجام دیں جبکہ اس دوران حمل کے حوالے سے سوسائٹی نے اپنی گائیڈلائن پیش کیں۔

مزید :

علاقائی -سندھ -کراچی -