صدرعارف علوی نے سب سے زیادہ77 آرڈیننس جاری کیے،انہیں دیگر ادارے یاد نہیں آئے:سینیٹر عرفان صدیقی

صدرعارف علوی نے سب سے زیادہ77 آرڈیننس جاری کیے،انہیں دیگر ادارے یاد نہیں ...
صدرعارف علوی نے سب سے زیادہ77 آرڈیننس جاری کیے،انہیں دیگر ادارے یاد نہیں آئے:سینیٹر عرفان صدیقی
سورس: فائل فوٹو

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک)مسلم لیگ (ن) کے رہنما سینیٹر عرفان صدیقی نے کہا  ہےکہ صدر عارف علوی نے کبھی غیر جانبدار صدر کا کردار ادا نہیں کیا۔آئین میں ہے کہ21 دن بعد اسمبلی کا اجلاس ضرور بلایا جائے۔صدر نے سب سے زیادہ77 آرڈیننس جاری کیے۔

انہوں نے  ان خیالات کا اظہار  نجی ٹی وی کے پروگرام "نیا پاکستان" میں میزبان شہزاد اقبال سے گفتگو کرتے ہوئے  کیا۔ سینیٹر عرفان صدیقی نے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ آئین میں ہے کہ21 دن بعد اسمبلی کا اجلاس ضرور بلایا جائے۔صدر عارف علوی نے کبھی غیر جانبدارصدر کا کردار ادا نہیں کیا۔ماضی میں صدر کا سیاسی جماعتوں سے تعلق رہا ہے لیکن کبھی آئین سے رو گردانی نہیں کی۔عارف علوی کے 2 اقدامات کو سپریم کورٹ خلاف آئین قرار دے چکی ہے۔انہوں نے آنکھیں بند کرکے قاضی فائز عیسیٰ کے بارے میں جو ریفرنس آیا ڈال دیا۔ انہوں نے یہ دیکھے بغیر کہ عدم اعتماد کدھر جارہی ہے وزیراعظم ہاؤس کا اعتماد کھو چکا ہے ۔ انہوں نے اس کے کہنے پر اسمبلی توڑ دی۔صدر مملکت کی ذمہ داری کسی اور کی ذمہ داری سے مشروط نہیں ہے۔اگر کوئی ادارہ اپنی آئینی ذمہ داری پوری نہیں کررہا یا کوتاہی کررہا ہے ۔ وہ صدر مملکت کو یہ لائسنس نہیں دیتاکہ وہ اپنی آئینی ذمہ داری سے انحراف کریں ۔عارف علوی نے سب سے زیادہ77 آرڈیننس جاری کیے جب انہیں دیگر ادارے یاد نہیں آئے۔ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ آئین کہ جو تقاضے ہیں الیکشن کمیشن وہ پورا کرے ۔اس حکومت کو آگے لے کر چلنا اور نتیجہ خیز بنانابڑے کٹھن معاملات ہیں۔