4جماعتی اتحاد نے28 فروری کو بلوچستان اسمبلی کے باہر دھرنے کا اعلان کر دیا

4جماعتی اتحاد نے28 فروری کو بلوچستان اسمبلی کے باہر دھرنے کا اعلان کر دیا
4جماعتی اتحاد نے28 فروری کو بلوچستان اسمبلی کے باہر دھرنے کا اعلان کر دیا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

کوئٹہ(ڈیلی پاکستان آن لائن) چار جماعتی اتحاد نے 17روزسے ڈپٹی کمشنر آفس کے سامنے جاری دھرنا ختم کر کے28 فروری کو بلوچستان اسمبلی کے باہر دھرنا دینے کا اعلان کر دیا۔ تفصیلات کے مطابق پشتونخوامیپ کے عبدلقہار ودان ، نیشنل پارٹی کے حاجی عطا ءمحمد بنگلزئی ،بی این پی کے غلام نبی مری اور ایچ ڈی پی کے قادر علی نائل ،کبیر افغان اور ریاض کا کہنا ہے   کہ کوئٹہ میں 17روزدھرنا دےکراحتجاج ریکارڈکروایا لیکن کسی نے بات نہیں سنی، کوئٹہ میں دھرنا ختم کرکے صوبے میں احتجاج کووسعت دیں گے، بلوچستان بھر میں ریلیاں،دھرنےاوراحتجاجی جلسے کئے جائیں گے۔ چار جماعتی اتحاد کے قائدین نے متفقہ فیصلہ کیا ہے کہ دھرنا ختم کیا جائے اب پورے بلوچستان میں ڈی آر اواور آر او کے دفاتر کے باہر ہفتہ میں ایک دن دھرنا اور احتجاج کیا جائے گا،احتجاج اس وقت تک جاری رہے گا جب تک مطالبات تسلیم نہیں کئے جاتے۔انہوں نے کہاکہ ہمارے مینڈیٹ کو تسلیم نہیں کیا گیاتو 28فروری کو بلوچستان اسمبلی کے سامنے دھرنا اور احتجاج کرینگے اور اپنے آئندہ کا لائحہ عمل بھی طے کریں گے۔