ایک میز پر 4 آسٹریلین بوڑھیاں، گپ شپ لگاتی اور لنچ اُڑاتی نظر آئیں، اتنی عمر کی عورتیں ہمارے ہاں گھر میں قید ہو کر رہ جاتی ہیں، ہلنا جلنا موقوف کر دیتی ہیں 

 ایک میز پر 4 آسٹریلین بوڑھیاں، گپ شپ لگاتی اور لنچ اُڑاتی نظر آئیں، اتنی عمر ...
 ایک میز پر 4 آسٹریلین بوڑھیاں، گپ شپ لگاتی اور لنچ اُڑاتی نظر آئیں، اتنی عمر کی عورتیں ہمارے ہاں گھر میں قید ہو کر رہ جاتی ہیں، ہلنا جلنا موقوف کر دیتی ہیں 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

مصنف:ع۔ غ۔ جانباز 
 قسط:58
آسٹریلین اکانومی مضبوطی کی طرف نہ جا سکی۔ اِن کا بجٹ بھی مخالف اپر ہاؤس نے پاس نہیں کیا۔ پبلک اِس گورنمنٹ سے خوش نہیں ہے۔ لہٰذا ایک غیر یقینی صورتحال کا سامنا ہے۔ پرائم منسٹر "Abbot" کے تاثرات کہ
"Imminet threat of Islamic state terrorism need to be put in context."
ڈر کی ماری پولیٹکس چاہتی ہے کہ ہمیں تقسیم کر دیا جائے۔ سب سے زیادہ Vulnerable وہ ہیں جو دیکھنے میں مختلف لگیں۔ اُن کی بول چال مختلف ہو اور لباس اُن کے بھی مختلف ہوں۔ اِس ملک کی میجورٹی آبادی سے مقابل۔
میرے خیال میں یہی لوگ ہیں جو At risk ہیں۔ وہ خود باقی آبادی سے alienated ہوجائیں گے۔ یا کر دئیے جائیں گے۔ اچھّے لیڈر وہ ہیں جو Inclusive Policies کی بات کریں۔ بجائے اِس کے وہ Fear کے اوپر بلڈنگ کھڑی کریں۔ Fear کے خوف سے اپنی پالیسی تشکیل دیں۔ ایک انجانے خوف سے۔ یاد رہے ایبٹ کی لیبرگورنمنٹ میں بغاوت ہوئی اور Mr. Turnbull وزیراعظم بن گئے۔
بلیو آئس اور گریماں کی دعوت 
بروز اتوار 13 ستمبر 2015ء  اپنے گھر 41-Rowntree St.  سے 12 بجے روانہ ہوئے۔ نواسے صبیح کو 20 منٹ کی ڈرائیو پہ ٹیوشن سینٹر سے لیا اور پھر چل دئیے قصبہ Auburn کی طرف جہاں سے حلال برگر ملتے ہیں۔ آسٹریلیا میں ڈھونڈنا ہوتا ہے، یہ نہیں کہ ہر جگہ آپ کو حلال فوڈ مل جائے۔ آرڈر دیا اور صبیح اور عریشہ اُدھر پلیئنگ کارنر میں جا داخل ہوئے۔ ایک میز پر ایک ساتھ ہی 4 آسٹریلین گوری کافی بوڑھیاں، گپ شپ لگاتی اور لنچ اُڑاتی نظر آئیں۔ اتنی عمر کی عورتیں ہمارے ہاں گھر میں قید ہو کر رہ جاتی ہیں۔ ہلنا جلنا موقوف کر دیتی ہیں۔ آپ کہہ سکتے ہیں یہاں فیملی سسٹم Intact ہے لیکن پھر بھی ہمارے ہاں بڑھاپا جلد اپنے اُوپر طاری کر لیا جاتا ہے۔ یہاں کافی گہما گہمی تھی لیکن بس آئے، لنچ کیا اور چل دئیے۔ بیکار بیٹھنے کے لیے یہاں وقت کم ہی ہوتا ہے۔ ہم بھی لنچ کے بعد اپنی اگلی منزل کی طرف چل دئیے۔
یہ جگہ کہلاتی ہے ”بلیو آئس“یہ ایک "Ice Arena" ہے، جہاں لوگ Ice Scating کے لیے آتے ہیں۔ پہلا سیزن چل رہا تھا۔ لہٰذا ہمیں آدھ گھنٹہ انتظار کرنا پڑا ہم باہر نکل گئے سامنے ایک بڑی جھیل ہے جس میں تیرتی مُرغابیاں اور دوسرے آبی جانور ہماری تفریح کا سامان بنے۔ جھیل کے گردا گرد بنے واکنگ ٹریک میں ہم نے بھی حصّہ ڈالا۔ دس پندرہ منٹ وہاں واک کا لُطف اُٹھایا۔ جھیل کنارے کشادہ بنچ رکھّے ہوئے ہیں آرام کریں۔ لیٹ جائیں۔ بائیں طرف ایک بڑا ہوٹل۔ اور سامنے ایک سفیدی کو شرماتا ایک کئی منزلہ ہسپتال۔ دائیں طرف رہائشی آبادی۔
پہلا سیزن ختم ہوا تو دونوں بچّوں کے ٹکٹ لیے۔ 16 آسٹریلین ڈالر فی بچّہ۔ سیکٹنگ ٹائم، دو گھنٹے، ٹکٹ لے کر اندر جا کر Skate Hire Shop سے دونوں کے لیے جُوتے کرایہ پر لیے۔ اُس کے ساتھ ہی اندر تھی دُوسری Snack - Blue Shop اور ساتھ واش رومز۔ (جاری ہے)
نوٹ: یہ کتاب ”بُک ہوم“ نے شائع کی ہے۔ ادارے کا مصنف کی آراء سے متفق ہونا ضروری نہیں۔(جملہ حقوق محفوظ ہیں)

مزید :

ادب وثقافت -