علامہ محمد اسلم صدیقی کا درس و قرآن کی نشست سے خصوصی خطاب

علامہ محمد اسلم صدیقی کا درس و قرآن کی نشست سے خصوصی خطاب

 لاہور (پ ر) ممتاز مذہبی سکالر مفسر قرآن پروفیسر ڈاکٹر علامہ محمد اسلم صدیقی نے درس قرآن کی نشست میں ’’سورہ والضحیٰ‘‘ کا خلاصہ بیان کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ سورہ مکی ہے اس میں اہل مکہ کو تنبیہ کی گئی ہے کہ تم آپ ؐ کی مخالفت نہ کرو کہیں ایسا نہ ہو کہ تمہارا انجام بھی ویسا ہو جیسے پہلی قوموں کا ہوا آپؐ کی چچی ابو لہب کی بیوی آپ ؐ کی شدید مخالفت کرتی تھی شان نزول کا یہ عالم ہے کہ نبی کریم ؐ پر چند روز کیلئے وحی نازل نہ ہوئی، لوگوں نے یہ تاثر دینا شروع کر دیا کہ شاید آپ ؐ کا رابطہ اللہ تعالیٰ سے ٹوٹ گیا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ انسان کو محبت بڑھانے کے لئے کبھی کبھی ملنا چاہئے، روز ملنے سے محبت کم ہوتی ہے اور قدر بھی کم ہوتی ہے۔ محبت ایک آزمائش ہے، جب بھی کوئی وحی آپ ؐ اکثر بیمار ہو جاتے یہ بڑی ہمت کا کام ہے۔ آپ ؐ تحمل کا مظاہرہ کرتے، اللہ تعالیٰ نے آپ ؐ کے حالات میں بہتری کی، جیسے جیسے آپ ؐ آگے بڑھتے جاتے اللہ تعالیٰ کی مہربانیاں آپ ؐ پر ہوتی رہیں آپ ؐ یتیم پیدا ہوئے آپ ؐ کے دادا حضرت عبدالمطلب اپنے قبیلے کے سردار تھے۔ آپ ؐ کا خاص خیال رکھا گیا، چار سال کی عمر میں آپ ؐ مکہ معظمہ میں آ گئے اور پھر آپ ؐ اپنی والدہ ماجدہ کی آغوش میں آ گئے چالیس سال کی عمر میں آپ ؐ کو نبوت ملی۔ ، لڑکپن کی عمر میں آپ ؐ ابو طالب ؓ کی تحویل میں رہے، گھر میں غربت تھی، ابو طالب بن ہاشم قبیلے کے سردار تھے۔   ۔ انہوں نے مزید کہا کہ یتیم کے بارے میں واضح حکم کہ تم یتیموں کے ساتھ حسن سلوک کیا کرو۔ یتیموں کی کفالت کرتے رہو یہاں تک واضح ہے وہ گھر بہتر ہے جہاں یتیم پرورش پاتا ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 4

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...