فیصل آباد،گیس بحران سے تجارتی سرگرمیاں ٹھپ ہو کر رہ گئیں

فیصل آباد،گیس بحران سے تجارتی سرگرمیاں ٹھپ ہو کر رہ گئیں

فیصل آباد(بیورورپورٹ)گیس کی طویل بندش کے ساتھ ساتھ بجلی کی لوڈشیڈنگ نے فیصل آباد کی صنعتی تجارتی سرگرمیوں کو بری طرح متاثر کر دیا ہے جبکہ گذشتہ رات سے صبح نو بجے تک بجلی کے طویل بریک ڈاﺅن قومی معیشت کو مزید دھچکہ لگا ہے صنعتکاروں کا کہنا ہے کہ ایک سال کے دوران بجلی کا یہ تیسرا بڑا بریک ڈاﺅن متعلقہ محکمے اور ذمہ داران کی نااہلی کی عکاسی کرتا ہے اس سے نہ صرف صنعتی تجارتی سرگرمیوں کو شدید نقصان پہنچا بلکہ میٹریل اور مشینری کے حوالے سے بھی کروڑوں روپے کے نقصان کا سامنا کرنا پڑا ہے اس کے علاوہ محنت مزدوری کر کے رزق کمانے والے ہزاروں محنت کشوں کی روزگار سے محرومی نے معاشی اقتصادی بدحالی میں مزید اضافہ کر دیا ہے منٹوں کی پراسیس کا مال 12گھنٹے سے زائد کیمیکلز میں پڑا رہنے سے اپنی ویلیو کھو گیا جبکہ پیداواری عمل میں کمی اور لاگت میں اضافہ در اضافہ نے معیشت کی ناﺅ ڈبونے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی بجلی اور گیس کی قیمتوں میں مختلف ٹیکسز شامل کر کے اس کے نرخ کئی گنا بڑھانے کے ساتھ ساتھ بجلی گیس کی طویل لوڈشیڈنگ نے تاجروں صنعتکاروں کے علاوہ عام آدمی کی زندگی بھی اجیرن بنا دی ہے۔

اجیرن زندگی

مزید : صفحہ آخر