بحران پہ بحران ، وزیر اعظم حکومتی ٹیم کی کارکر دگی سے پریشان

بحران پہ بحران ، وزیر اعظم حکومتی ٹیم کی کارکر دگی سے پریشان
بحران پہ بحران ، وزیر اعظم حکومتی ٹیم کی کارکر دگی سے پریشان

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

اسلام آباد (ویب ڈیک) وزیراعظم نوازشریف تجربہ کار ٹیم اور بہتر حکومت کا تاثر مجروح ہونے پر سخت مایوسی کا شکار ہیں، وزراءکی کارکردگی سے نالاں وزیراعظم اپنی ٹیم میں تبدیلی کا ارادہ رکھتے ہیں، اس مقصد کیلئے مناسب وقت کا انتظار کیا جارہا ہے ، جو سینیٹ انتخابات کے بعد مارچ کا وسط ہوسکتا ہے ، پٹرولیم بحران کے بعد پورے ملک میں طویل ترین بجلی کے بریک ڈاﺅن نے حکومت کو ہلا کر رکھ دیا ہے ، تجربہ کارٹیم اور بہتر حکومت کے تاثر کو اس قدر دھچکا لگا ہے کہ سنبھلنے میں وقت لگے گا،وزیراعظم اس صورتحال سے زیادہ خوش نہیں ہیں کہ انہیں پٹرولیم بحران پر مسلسل کئی دن اجلاس بلانا پڑا اور ڈیوس جیسی اہم کانفرنس میں شرکت ملتوی کرنا پڑی ،وزیراعظم نوازشریف جو یکسوئی کیساتھ دہشتگردی کے خاتمہ کیلئے نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد، میگاپراجیکٹس اور بیرونی سرمایہ کاری پر توجہ مرکوز کئے ہوئے تھے وہ پٹرول،گیس اور بجلی جیسے بحرانوں میں پھنس کررہ گئے ہیں،وزیراعظم کو اپنی ٹیم سے بہت توقعات وابستہ تھیں جو پوری نہیں ہور ہیں،چند ایک کو چھوڑ کر وزراءکی کارکردگی سے وزیراعظم قطعی طور پر مطمئن نہیں ہیں وہ ٹیم میں بڑے پیمانے پر فوری تبدیلی اور توسیع چاہتے ہیں تاہم سینیٹ انتخابات آڑے آگئے ہیں کیونکہ انتخابات کے نتیجہ میں کئی چہروں کو پارلیمنٹ سے رخصت ہونا ہے اور نئے چہروں کو پارلیمنٹ میں آنا ہے ،حکومتی ذرائع یہی بتاتے ہیں کہ وفاقی کابینہ میں توسیع، ردوبدل سینیٹ انتخابات کے بعد ہوگا۔وزیراعظم نوازشریف،عمران خان کی طرف سے دھرنا ختم کرنے کے اعلان کے بعد خود کو ہلکا محسوس کررہے تھے ،وزراءنے انہیں دوبارہ مشکل میں ڈال دیا ہے وزیراعظم سمجھتے ہیں کہ اگر وہ توانائی بحران کے متعلق اجلاسوں میں پھنسے رہے تو وہ ان ترجیحات کو وقت نہیں دے پائیں گے جن کا تعین انہوں نے حکومت میں آنے سے قبل کررکھا ہے ،انتخابی منشور میں عوام سے کئے گئے وعدے کس طرح پورے ہونگے ، اس تناظر میں وزیراعظم نئی ٹیم کا انتخاب چاہتے ہیں جن میں نوجوان اور نئے چہروں کو شامل کیا جائیگا۔

مزید : اسلام آباد