نیکسس 6 کا وہ فیچر جو ایپل نے ”چرا“ لیا

نیکسس 6 کا وہ فیچر جو ایپل نے ”چرا“ لیا

لاہور (کامران اکرم) سرچ انجن گوگل کا موبائل فون کیلئے آپریٹنگ سسٹم اینڈرائڈ جہاں مقبولیت کی بلندیوں کو چھو رہا ہے وہیں ان کی سمارٹ فون لائن اپ "Nexus" نے بھی دھوم مچا رکھی ہے اور اینڈرائڈ استعمال کرنے والے شائقین گوگل کے موبائل فونز بھی شوق سے استعمال کرتے ہیں۔

حال ہی میں اینڈرائڈ کے نئے ورژن لالی پاپ کے ساتھ گوگل نے نیکسس سیریز کا نیا سمارٹ فون نیکسس 6 بھی متعارف کرایا تاہم ایپل کمپنی کے باعث گوگل اس موبائل فون میں اہم فیچر متعارف نہ کرا سکا۔ ایک رپورٹ کے مطابق نیکسس 6 کی ریلیز سے قبل یہ عندیہ دیا گیا تھا کہ اس میں فنگر پرنٹ سیکنر کا استعمال بھی کیا جائے گا اور اس کیلئے "AuthenTec" نامی کمپنی کے ساتھ معاہدہ بھی طے ہو گیا تھا تاہم عین وقت پر ایپل نے2012ءمیں اس کمپنی کو 356 ملین ڈالر میں خرید کر گوگل کے ارادوں پر پانی پھیر دیا۔

موٹورولا کمپنی کے سابق چیف ایگزیکٹو آفیسر ڈینس ووڈ سائڈ نے بتایا ہے کہ ایپل کی جانب سے کمپنی خریدے جانے کے بعد نیکسس 6 میں فنگر پرنٹ ٹیکنالوجی استعمال کرنے کیلئے کسی اور کمپنی کے ساتھ معاہدہ طے کرنا تھا لیکن اس کا کوئی بھی متبادل نظر نہیں آیا جس کے باعث انہوں نے اس فیچر کو شامل نہ کرنے کا ہی فیصلہ کر لیا۔

مزید : سائنس اور ٹیکنالوجی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...