بھارت میں آدھے سر کے ساتھ پیدا ہونے والی نومولود بچی ،حمل کے دوران ماں کی کس غلطی کا یہ نتیجہ نکلا ،ماہرین نے اولاد کے خواہشمند جوڑوں کو خبر دار کردیا

بھارت میں آدھے سر کے ساتھ پیدا ہونے والی نومولود بچی ،حمل کے دوران ماں کی کس ...
بھارت میں آدھے سر کے ساتھ پیدا ہونے والی نومولود بچی ،حمل کے دوران ماں کی کس غلطی کا یہ نتیجہ نکلا ،ماہرین نے اولاد کے خواہشمند جوڑوں کو خبر دار کردیا

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بچوں کے ابنارمل پیدا ہونے کے واقعات اکثردیکھنے میں آتے رہتے ہیں۔ بھارت میں بھی گزشتہ دنوں ایک ایسی ہی بچی پیدا ہوئی جس کا پیدائشی طور پر آدھا سر تھا اور آنکھیں خوفناک انداز میں باہر کو ابھری ہوئی تھیں۔ ڈاکٹروں نے آدھے سر کے ساتھ پیدا ہونے والوں بچوں کے کیسز کو ان کی ماﺅں کی غلطی قراردیتے ہوئے کہا ہے کہ جو خواتین حمل کے دوران اپنی خوراک کا خیال نہیں رکھتیں اور بے قاعدہ اور غیرمتناسب غذا کھاتی ہیں ان کے ہاں آدھے سر والے بچے پیدا ہوتے ہیں۔

بھارت میں یہ بچی ریاست اترپردیش کے ضلع امروہہ میں 32سالہ خاتون سویتا رانی کے ہاں پیدا ہوئی۔ بچی اپنی پیدائش کے 48گھنٹے بعد ہی ہارٹ فیل ہونے کے باعث جاں بحق ہو گئی۔سویتا رانی کا کیس دیکھنے والی ڈاکٹر کوسوم لتا کا کہنا تھا کہ ”خاتون نے اپنی غذا کا خیال نہیں رکھا ۔ کھانے میں بے قاعدگی کا مظاہرہ کیا اور غیرصحت مند اشیاءکھاتی رہی جس کی وجہ سے یہ بچی پیدا ہوئی۔

یہی وجہ ہے کہ ہم ڈاکٹر حاملہ خواتین کو باقاعدگی کے ساتھ چیک اپ کروانے کی ہدایت کرتے ہیں تاکہ ہم غذا سمیت دیگر معاملات میں ان کی رہنمائی کر سکیں۔“ ڈاکٹر کوسوم کا کہنا تھا کہ ” اس بچی کی آنکھیں اتنی بڑی تھیں کہ پیدائش کے وقت بھی کھلی ہوئی تھیں، اس کی وجہ یہ تھی کہ بچی کا سر بالکل نشوونما نہیں پا سکا تھا۔ اس بچی نے نارمل پیدا ہونے والے بچوں کی طرح حرکت بھی نہیں کی تھی۔ نہ یہ روئی اور نہ ہی ہلی جلی تھی۔ “

مزید :

ڈیلی بائیٹس -