’چھٹیاں منانے آئی خاتون کو پہنچتے ہی ریپ اور پھر قتل کر دیا گیا ‘

’چھٹیاں منانے آئی خاتون کو پہنچتے ہی ریپ اور پھر قتل کر دیا گیا ‘
’چھٹیاں منانے آئی خاتون کو پہنچتے ہی ریپ اور پھر قتل کر دیا گیا ‘

  

سینٹ جارج ( نیوز ڈیسک) بحر اوقیانوس کے مغرب میں واقع کریبئین جزائر اپنی خوبصورتی اور قدرتی ماحول کے لئے دنیا بھر میں شہرت رکھتے ہیں۔ ان علاقوں کی خوبصورتی ہر ماہ لاکھوں سیاحوں کو اپنی طرف کھینچ لیتی ہے، لیکن ایک بدقسمت امریکی دوشیزہ کی موت اسے ان جزائر کی طرف کھینچ لے گئی۔

اخبار ’ڈیلی میل‘ کے مطابق کریبین جزیرے گریناڈا کے مرکز سے 12 کلومیٹر کی دوری پر ایک امریکی خاتون کی لاش ملی، جو اپنے خاوند کے ساتھ یہاں ہنی مون منانے آئی تھی۔گریناڈا میں قدم رکھے ابھی پہلا دن ہی تھا کہ اسے وحشیانہ طریقے سے جنسی تشدد کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کر دیا گیا۔ مقامی پولیس کے مطابق 45 سالہ خاتون اپنے خاوند کے ساتھ ہفتہ کی شام کو مشہور سیاحتی مقام لاساگیسے ریزورٹ پر پہنچی تھی ۔

امریکی خاتون صحافی سیو ہارڈی بھی اسی جزیرے پر چھٹیاں گزارنے کیلئے موجود تھیں۔ انہوں نے بتایا کہ وہ اپنی فیملی کے ساتھ دھوپ سے لطف اندوز ہونے کی تیاری کررہی تھیں کہ اچانک کچھ دور واقع ریسٹورنٹ کے قریب لوگ جمع ہونا شروع ہوئے اور ایک شور بلند ہو گیا، جس سے شدید خوف و ہراس پھیل گیا۔ کچھ ہی دیر بعد خبر ملی کہ ایک خاتون سیاح کو عصمت دری کے بعد قتل کیا جا چکا تھا۔

سیاحتی ریزورٹ کی ایک ملازم نے سیوہارڈی کو بتایا کہ ظلم کا نشانہ بننے والی امریکی خاتون بہت ہی خوبصورت تھیں وہ اپنے خاوند کے ساتھ چہل قدمی کیلئے نکلی تھیں، لیکن ساحل کے الگ تھلگ حصے میں اُن پر حملہ کیا گیا۔ خاتون کا خاوند تقریباً نصف میل تک بھاگتاہوا مدد مانگنے کے لئے واپس آیا، لیکن جب تک لوگ واپس خاتون کے پاس پہنچے اسے قتل کیا جا چکا تھا۔ ہارڈی نے بتایا کہ ریزورٹ سے تقریباً نصف میل کی دوری پر مینگرووکے جھنڈ واقع ہیں، جن میں سے ہوتے ہوئے راستہ دوسری طرف ساحل کے ایک مختلف علاقے کی طرف نکل جاتا ہے۔ غالباً یہ بدقسمت جوڑا اپنا پہلی واک کرتے ہوئے مینگروو کے جھنڈ کی طرف گیا، جہاں ان کے ساتھ اندوہناک واقعہ پیش آگیا ۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -