دہشتگردی کی نام نہاد جنگ میں سب سے زیادہ نقصان مسلمانوں کا ہوا ،عبدالغفار

دہشتگردی کی نام نہاد جنگ میں سب سے زیادہ نقصان مسلمانوں کا ہوا ،عبدالغفار

  

لاہور(نمائندہ خصوصی ) دنیا کو دہشت گردی اور تباہی کی طرف دھکیلنے والے دوسروں سے ڈومور کا مطالبہ کس منہ سے کر رہے ہیں۔ دہشت گردی کے خلاف موثر اقدامات کا مطالبہ کرنے والے ’’بغل میں چھری منہ میں رام رام‘‘ کی پالیسی پر عمل پیرا ہیں۔ ان خیالات کا اظہار جماعت اہل حدیث پاکستان کے رہنما حافظ عبدالوہاب روپڑی اور مولانا شکیل الرحمن ناصر نے گذشتہ روز جامعہ دارالقدس چوک دالگراں لاہور میں ایک تنظیمی اجلاس کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے امریکی صدر انٹرویو میں دئیے گئے بیانات پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ دہشت گردی کی نام نہاد جنگ میں سب سے زیادہ نقصان مجموعی طور پر مسلمانوں کا ہوا ہے۔ دنیا میں بسنے والے مسلمانوں پر دائرہ حیات تنگ کیا جا رہا ہے اور طرح طرح کی اذیتیں پہنچائی جا رہی ہیں۔ اس کے بعد ایک عالمی سازش کے تحت اسلام اور مسلمانوں کا چہرہ بگاڑ کر دنیا کے سامنے پیش کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ عالم اسلام کا اتحاد وقت کی اہم ترین ضرورت ہے۔ دشمنان اسلام مسلمانوں کو کمزور کرنے کیلئے سر جوڑ کر بیٹھ چکے ہیں اور اسلام کے خاتمے کیلئے دن رات مصروف عمل ہیں۔

امت مسلمہ متحد ہو کر ہی کفار کی مذموم کارروائیوں کا منہ توڑ جواب دے سکتے ہیں۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -